دن اور رات کی لمبائی برابر… آج شام سے خزاں شروع

31

22 ستمبر 2020 کے روز نہ صرف دن اور رات کی لمبائی برابر ہے بلکہ پاکستانی معیاری وقت کے مطابق شام 6 بج کر 30 منٹ پر زمین کے شمالی نصف کرے میں خزاں کا آغاز بھی ہوجائے گا۔ ایسا ہر سال ہوتا ہے اور یہ موقع ’’اعتدالِ خریفی‘‘ (Autumnal Equinox) کہلاتا ہے۔ البتہ ٹھیک اسی وقت زمین کے جنوبی نصف کرے میں بہار کی ابتداء ہوجائے گی۔

یاد رہے کہ ہمارا سیارہ زمین اپنے محور پر 23.45 ڈگری جھکا ہوا ہے جس کے باعث یہاں پورے سال میں چار موسم یعنی سردی، گرمی، خزاں اور بہار ہوتے ہیں۔ اسی جھکاؤ کی وجہ سے زمین کے شمالی نصف کرے میں جو موسم ہوتا ہے، اس کا بالکل اُلٹ موسم جنوبی نصف کرے میں ہوتا ہے۔

فلکیات (ایسٹرونومی) کے نقطہ نگاہ سے بات کریں تو ہر سال موسموں کی تبدیلی بھی چار مرحلوں میں ہوتی ہے:

  • پہلا: اعتدالِ ربیعی (Vernal Equinox) جسے فلکیاتی اعتبار سے ’’موسمِ بہار کا آغاز‘‘ بھی کہا جاتا ہے۔ اس روز رات اور دن کی لمبائی برابر ہوتی ہے۔ اس سال یہ موقع پاکستانی وقت کے مطابق 20 مارچ کو صبح 8 بج کر 49 منٹ پر آیا تھا۔
  • دوسرا: انقلابِ گرما (Summer Solstice) جسے زمین پر موسمِ بہار کا نقطہ آغاز قرار دیا جاتا ہے۔ یہ سال کا سب سے طویل دن اور مختصر ترین رات ہوتی ہے۔ یہ موقع اس سال 21 جون کی صبح 4 بجکر 43 منٹ پر آیا تھا۔
  • تیسرا: اعتدالِ خریفی (Autumnal Equinox) یعنی ’’خزاں شروع ہونے کا موقع‘‘ جس کی تفصیلات اس خبر کی ابتداء میں بیان کی گئی ہیں۔
  • چوتھا: انقلابِ سرما (Winter Solstice) کہ جب سال کی سب سے لمبی رات اور سب سے چھوٹا دن ہوتا ہے۔ فلکیات میں یہی وقت موسمِ سرما کا آغاز بھی قرار دیا جاتا ہے۔ اس سال کا انقلابِ سرما پاکستانی معیاری وقت کے حساب سے 21 دسمبر کی سہ پہر 3 بج کر 1 منٹ پر واقع ہوگا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.