سعودی سائنسدانوں کا کارنامہ، مصنوعی جلد تیار کرلی

437

سعودی عرب کے سائنسدانوں نے طب کے میدان میں حیرت انگیز کارنامہ سرانجام دیتے ہوئے ایسی جلد تیار کی ہے جو ناصرف، مضبوط اور لچک دار ہے بلکہ حساسیت بھی رکھتی ہے۔

یہ حیرت انگیز ایجاد شاہ عبداللہ یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے سائنسدانوں کی کوششوں کا ثمر ہے۔ ان کا دعویٰ ہے کہ اس جلد کو مستقبل میں مصنوعی اعضا میں استعمال کیا جائے گا۔ اس جلد کی خصوصیت یہ ہے کہ یہ خود بخود مرمت ہوتی ہے۔

اس نئی ایجاد کو الیکٹرانک جلد کا نام دیا گیا ہے۔ یہ انسانی جلد کی طرح حساس ہے۔ اس ایجاد کے محقق ڈاکٹر یاچن کائی نے کہا ہے کہ مثالی الیکٹرانک جلد کو انسانی جلد کے بہت سے قدرتی افعال مثلا درجہ حرارت کی حس اور چھونے سے پیدا ہونے والے قدرتی رد عمل کا ہم آہنگ بنایا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مناسب طریقے سے لچکدار الیکٹرانکس جلد تیاری جو اس طرح کے نازک کام انجام دے سکے جبکہ روزمرہ کی زندگی میں پیش آنے والے چیلنج کا مقابلہ کرسکے۔