مقبوضہ کشمیر: خصوصی حیثیت ختم ہونے کے بعد سخت سیکیورٹی میں پہلے انتخابات

58

بھارتی حکومت کی جانب سے گزشتہ سال خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں پہلی بار براہ راست انتخابات کے دوران عوام نے سخت سیکیورٹی میں ووٹ ڈالے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ‘اے ایف پی’ کے مطابق حریت پسندوں کی طرف سے حملوں کے خدشات کے باعث ہر پولنگ اسٹیشن کے باہر درجنوں پولیس و پیراملٹری اہلکاروں کو مشین گنز کے ساتھ تعینات کیا گیا تھا، جبکہ آرمی اہلکار سڑکوں پر پیٹرولنگ کرتے رہے۔

مبصرین نے کہا کہ سیکیورٹی اہلکاروں کے درمیان سے گزر کر، کورونا وائرس کے خطرے اور برفباری کے باعث مقامی کونسلز کے اراکین کے انتخاب کے لیے عوام کی کم تعداد ووٹ ڈالنے آئی۔

ووٹنگ کا عمل 19 دسمبر تک آٹھ مراحل میں مکمل ہوگا جبکہ اس کے تین روز بعد سے گنتی کا عمل شروع ہوگا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.