افغانستان سے فوجیوں کے جلد بازی میں انخلا کی بھاری قیمت چکانی پڑ سکتی ہے، نیٹو چیف کی تنبیہ

261

نیٹو کے سیکریٹری جنرل جینز اسٹولٹنبرگ نے خبردار کیا ہے کہ افغانستان سے امریکی اور اتحادی فوجیوں کے جلد بازی میں انخلا کی بھاری قیمت چکانی پڑ سکتی ہے۔

نیٹو چیف کی جانب سے یہ بیان ان رپورٹس کے بعد سامنے آیا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ آنے والے ہفتوں میں افغانستان سے بڑی تعداد میں امریکی فوجیوں کو واپس بلانے کا حکم دے سکتے ہیں۔

خبر رساں ایجنسیوں کے مطابق جینز اسٹولٹنبرگ نے اپنے بیان میں کہا کہ ہمیں اب ایک مشکل فیصلے کا سامنا ہے، ہم افغانستان میں تقریباً 20 سال سے موجود ہیں اور کوئی نیٹو اتحادی ضرورت سے زیادہ وہاں رُکنا نہیں چاہتا، لیکن اسی وقت وہاں سے بہت جلدی یا غیر منظم طریقے سے واپسی کی بہت بھاری قیمت چکانی پڑ سکتی ہے۔

افغانستان میں نیٹو کے درجنوں رکن ممالک کے 12 ہزار سے کم فوجی موجود ہیں جو مقامی سیکیورٹی فورسز کو تربیت میں مدد فراہم کر رہے ہیں۔