قطر نے طیارے سے آف لوڈ کرکے خواتین کا ’طبی معائنہ‘ کرنے پر معذرت کرلی

438

قطری حکومت نے آسٹریلیا جانے والے ایک طیارے سے خواتین مسافروں کو آف لوڈ کر کے ان کا ’زچگی معائنہ‘ کیے جانے کے معاملے پر معذرت کرلی۔

قطری حکومت نے آسٹریلوی حکومت کی جانب سے خواتین مسافروں کے معائنے پر برہمی کا اظہار کیے جانے کے بعد معافی مانگی۔

آسٹریلوی حکومت نے دو روز قبل ہی مذکورہ واقعے کو ناقابل قبول قرار دیتے ہوئے اسے خواتین کی تضحیک قرار دیا تھا۔

قطری حکومت کے ترجمان نے 28 اکتوبر کو جاری بیان میں خواتین مسافروں کو طیارے سے آف لوڈ کر ان کے زبردستی ’زچگی معائنہ‘ کیے جانے پر معذرت کی۔

قطری حکومت کی جانب سے جاری بیان میں یہ بھی بتایا گیا کہ مذکورہ معاملے کی اعلیٰ سطح کی تفتیش کرکے معاملے کو شفاف انداز میں سامنے لایا جائے گا۔

قطری حکومت کے مطابق مذکورہ عمل اس وقت کیا گیا جب ایئرپورٹ حکام کو آسٹریلیا جانے والی ایئرلائن کے قریب کوڑے دان میں پلاسٹک کی تھیلی میں ایک نوزائیدہ بچہ ملا تھا۔

بیان میں نوزائیدہ بچے کے کوڑے دان میں ملنے کو خطرناک قرار دیتے ہوئے اسے خلاف قانون بھی قرار دیا گیا، ساتھ ہی کہا گیا کہ طبی ماہرین کی ہدایت پر عملے نے اس خاتون کو تلاش کرنے کی کوشش کی، جس نے بچے کو جنم دیا۔