افغان حکومت کی حمایتی خاتون کا طالبان کے ساتھ شامل ہونے کا اعلان

230

ایک ایسے موقع پر جب افغانستان کی حکومت اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات جاری ہیں تو افغان حکومت کی حمایتی خاتون کمانڈر کفتر نے طالبان کے ساتھ شامل ہونے کا اعلان کیا ہے۔

طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر اکاؤنٹ پر کمانڈر کفتر کی شمولیت کی تصدیق کرتے ہوئے خاتون کی تصویر بھی شیئر کی ہے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے مزید لکھا کہ بغلان کے نھرین ضلع میں ’کمانڈر کفتر‘ کے مسلح ساتھی بھی طالبان کے ساتھ شامل ہوئے ہیں۔

بغلان صوبے کے حکام نے کمانڈر کفتر کی افغان طالبان کے ساتھ شمولیت کے بارے میں ابھی کچھ نہیں کہا ہے۔ افغان میڈیا خامہ پریس کے مطابق عائشہ اپنے علاقے میں کمانڈر کفتر کے نام سے مشہور ہیں۔

انہوں نے تقریباً دو دہائیوں سے طالبان کے خلاف لڑائی کی ہے۔ کمانڈر کفتر نے روس کے خلاف جہاد میں بھی حصہ لیا تھا اور مقامی رپورٹس کے مطابق مجاہدین کی ایک بڑی تعداد ان کے ماتحت تھی۔ کمانڈر کفتر کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ افغانستان کی واحد خاتون وار لارڈ ہیں۔