طالبان حملوں کے جواب میں افغان فورسز کی کارروائیوں کا آغاز

328

لشگر گاہ: افغانستان کے جنوب میں عسکریت پسندوں کی جانب سے مسلسل 3 روز سے جاری لڑائی کے بعد افغان سیکیورٹی فورسز نے طالبان جنگجوؤں کے خلاف جوابی کارروائی کا آغاز کردیا ہے جبکہ اس پورے عمل سے افغان مذاکرات بھی ماند پڑتے نظر آرہے ہیں۔

صوبہ ہلمند میں طالبان کا حملہ 19 سال سے جاری جنگ کے خاتمے کے لیے شروع ہونے والے مذاکرات میں حکومت کا امتحان ہے جبکہ یہ امریکی انتخابات سے قبل صدر ٹرمپ کے کرسمس سے پہلے تمام امریکی افواج کو واپس بلانے کے وعدے کے لیے بھی مشکلات کھڑی کرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ جنگجوؤں کی یہ کارروائی طالبان اور افغان حکومت کے درمیان مذاکرات شروع ہونے کے بعد سے پہلی بڑی جبکہ فروری میں واشنگٹن سے ہوئے معاہدے جس میں امریکی فوج کے انخلا کا عزم ظاہر کیا گیا تھا اس کے بعد سے بڑی کارروائیوں میں سے ایک ہے۔