شادی کے جھوٹے وعدے کرنے پر بریڈ پٹ کے خلاف ایک لاکھ ڈالر ہرجانے کا دعویٰ

206

ٹیکساس سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون نے ہولی وڈ اداکار بریڈ پٹ پر شادی کے جھوٹے وعدے کرنے، خیراتی کاموں کے بہانے مبینہ طور پر ان کے پیسے ڈبونے پر ایک لاکھ ڈالر ہرجانے کا دعویٰ دائر کردیا۔

رپورٹ کے مطابق ہیلتھ کیئر ادارے کی چیف ایگزیکٹو افسر کیلی کرسٹینا نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے اداکار کی چیریٹی میک رائٹ فاؤنڈیشن کے لیے منعقد کیے گئے 5 ایونٹس میں ان کے لیے 40 ہزار ڈالر ادا کیے تھے۔

میک اٹ رائٹ فاؤنڈیشن سمندری طوفان کترینہ کے متاثرین کے لیے گھروں کی تعمیر پر توجہ مرکوز کرتی ہے۔

شکایت کے مطابق بریڈ پٹ نے خاتون سے فنڈز اکٹھ کرنے کے لیے رابطہ کیا تھا اور اگلی بار آنے کے وعدے پر تمام ایونٹس میں آخری لمحات میں اداکار ان ایونٹس میں نہیں آئے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ دونوں بہت جلد ایک دوسرے کو چاہنے لگے تھے یہاں تک اپنے قریبی تعلق میں انہوں نے شادی سے متعلق بات چیت بھی کی تھی۔

تاہم بریڈ پٹ نے ان تمام دعووں کی تردید کرتے ہوئے کیس کو مسترد کرنے کی قرارداد جمع کروائی ہے جس میں انہوں نے کہا کہ ان کا کبھی بھی کیلی کرسٹینا سے رابطہ نہیں ہوا۔

اس میں کہا گیا کہ نہ بریڈ پٹ اور نہ ہی میک اٹ رائٹ فاؤنڈیشن کا خاتون سے کوئی معاہدہ ہوا۔

مزید کہاگیا کہ جس طرح خاتون نے اپنی شکایت میں آگاہ کیا ہے اس سے معلوم ہوتا ہے کہ کسی معاہدے سے متعلق ان کے ایک سے زائد افراد سے رابطے تھے جو غیرقانونی طور پر آن لائن خود کو اداکار سے منسوب کررہے تھے جبکہ حقیقت میں ان کا کسی طریقے سے بریڈ پٹ سے کوئی تعلق نہیں تھا۔

کیس سے واقف ذرائع نے بتایا کہ یہ ایک ایسے فرد کا افسوسناک کیس ہے جس میں متاثرہ فرد ایک آن لائن سیلیبریٹی انٹرنیٹ اسکیم کا شکار ہوا جس کا اصل سیلیبریٹی سے کوئی تعلق نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں کو اس افسوسناک صورتحال سے سبق سیکھنا چاہیے۔

تاہم کیلی کرسٹینا نے بریڈ پٹ کی قرارداد کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ لڑیں گی اور یہ بھی کہا کہ اس کیس میں آگے بڑھنے کے لیے ان کے پاس کافی شواہد موجود ہیں۔