امریکی ریاست میں شادی تقریب کے بعد 177 افراد کورونا سے متاثر، 7 ہلاک

212

امریکا کی شمال مشرقی ریاست میئن کے مضافات میں شادی کی ایک تقریب کورونا وائرس کے بدترین پھیلاؤ کا باعث بن گئی، جہاں 7 افراد ہلاک ہوگئے اور 177 افراد متاثر ہوئے جبکہ ریاست بھر میں مزید وبائی امراض کا خوف پھیل گیا۔

شادی کی تقریب اگست کے اوائل میں ہوئی تھی جس میں 50 افراد کی حد کو توڑتے ہوئے 65 افراد نے شرکت کی تھی۔

چرچ میں تقریب کے بعد بگ موزان میں عشائیہ دیا گیا تھا اور دونوں تقریبات خوب صورت قصبے ملینوکیٹ کے قریب منعقد کی گئی تھیں۔

رپورٹ کے مطابق اس قصبے کی آبادی صرف 4 ہزار نفوس پر مشتمل ہے۔

میئن میں ان تقریبات کے 10 روز بعد دو درجن سے زائد افراد کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا تھا اور سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن (سی ڈی سی) نے تفتیش بھی شروع کردی تھی۔

سی ڈی سی کے مقامی ڈائریکٹر نیروف شاہ نے شادی کی تقریب میں شامل ہونے والے افراد کی صحیح تعداد سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ ہلاک ہونے والے تمام افراد شادی کی تقریب میں شریک نہیں ہوئے تھے۔

حکام کے مطابق مذکورہ تقریب سے ریاست کے کئی علاقے کورونا کے مرکز بن گئے اور اسی طرح اس علاقے میں 370 کلومیٹر دور ایک جیل میں 80 سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے تھے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ اس جیل کا گارڈ بھی شادی کی تقریب میں شریک تھا۔

ریاست میئن کے اسی علاقے میں واقع ایک چرچ میں بھی 10 کیسز رپورٹ ہوئے تھے جبکہ ہلاک ہونے والے 6 افراد اور 39 متاثرین میلینوکیٹ سے 160 کلومیٹر دور نرسنگ ہوم میں تھے۔

ٹاؤن کونسل کے سربراہ کوڈی مک ایون کا کہنا تھا کہ ہم نے جب وبا پھیلنے کی خبر سنی تو سب دبک گئے ہیں اور جیسے جیسے وبا پھیلتے گئی ہم نے قصبے کو مکمل طور پر دوبارہ بند کردیا تھا۔