بیروت کیلئے لبنانی ڈیزائنر کا نیا اقدام

172

مشرق وسطیٰ کے ملک لبنان کے دارالحکومت بیروت میں 4 اگست کو ہونے والے دھماکے کے نتیجے میں 200 سے سے زائد افراد ہلاک جبکہ ہزاروں زخمی ہوئے تھے۔

امریکا میں پیدا ہونے اور لبنان میں بڑے ہونے والے رامی کڈی نے اعلان کیا کہ وہ ہولناک دھماکے سے متاثر خاندانوں سے تعاون کے لیے ٹی شرٹس کا محدود ایڈیشن جاری کررہے ہیں جن کی کڑھائی پر خواتین کو بااختیار بنانے کے پیغامات درج ہیں۔

ان ڈیزائن سے حاصل ہونے والی تمام رقم جس کی ریٹیل پرائس 66ڈالر ہے، اس سانحہ سے متاثرہ افراد کی مدد کے لیے چلنے والی ایک تنظیم فیملی ایڈ لبنان کو دی جائے گی۔

علاوہ ازیں 14 اگست کو انہوں نے اعلان کیا تھا کہ موسم خزاں 2020 کے کلیکشن میں سے ایک سے ہونے والی آمدن لبنانی تنظیم بیب ڈبلیو شیبک کو دی جائے گی جو دھماکے سے متاثرہ خاندانوں کو گھروں کی تعمیر نو میں مدد فراہم کررہی ہے۔

رامی کڈی جو غیر روایتی ڈیزائنر کے طور پر جانے جاتے ہیں ان شخصیات میں شامل تھے جن کے اسٹوڈیوز دھماکے میں تباہ ہوگئے تھے۔

ان میں ظہیر مراد، ایلی صاب، ربیح کیروز، آندریا وازن، ازی اور اوستا، نکولس جبران اور دیگر شامل ہیں۔

19 اگست کو ظہیر مراد نے اسی طرح کا اقدام شروع کیا تھا جس کا مقصد سیاسی اور مذہبی طور پر آزاد لبنانی غیر سرکاری تنظیم آفریجوئی کے لیے فنڈز اکٹھا کرنا تھا۔

مراد نے ٹی شرٹس کے ذریعے پلیٹ ٖفارم پر ڈیزائنرز کی نمائندگی کے ان پر ‘رائز فرام دی ایشز’ ڈیزائن کیا تھا۔

ٹی شرٹ سے حاصل ہونے والا تمام منافع ، جن کی ریٹیل قیمت25.99 ڈالر ہے، امدادی سرگرمیوں میں خرچ ہوگا۔

اس کے ساتھ ہی بہت سی مشہور شخصیات بشمول شکیرا، جینیفر لوپیز ، کورٹنی کارڈیشین وغیرہ نے لبنان کی حمایت ظاہر کرنے کے لیے ڈیزائنر کی ٹی شرٹ خریدی ہے۔