پاک سعودی تعلقات، ڈاکٹر علی اسیری سابق سفیر کا جواب حاضر ہے

348

بین الاقوامی میڈیا ہو یا پاکستان میڈیا ہر طرف آج کل ایک ہی آواز سنائی دے رہی ہے پاک سعودی تعلقات کس موڑ پر پہنچ گئے ہیں، شاہ محمود قریشی نے ایک بیان کیا دے دیا پوری دنیا میں ہنگامہ مچ گیا، ہمارے آقا ہمیں روٹی کھلانے والے طیش میں آگئے، ہم آپ کے 30لاکھ شہریوں کو نکال دیں گے، ہم آپ کو سود پر صرف بینک میں رکھنے کیلئے پیسے نہیں دیں گے تو کیا پوری قوم بھوکی مر جائے گی، ایسا معلوم ہوتا ہے پاکستان سعودی عرب کا لے پالک یا بغل بچہ ہے یا پاکستانی قوم سعودی عرب کی نوکر ہے، آقا ناراض ہو گیا ایم بی ایس ناراض ہو گیا، محمد بن سلمان کو یہ نہیں یاد ہے کہ وہ اپنے چچا شہزادہ مکرن کا حق مار کر ولی عہد بنا ہے، بادشاہ سلمان نے اپنی خاندانی روایت کو توڑ کر اپنے بھائی کا حق مار کر اپنے بیٹے کو ولی عہد بنا دیا، تاریخ اس کو کبھی نہیں معاف کرے گی، اس خاندان میں یہ روایت پہلے بھی موجود ہے اب دوسری مرتبہ یہ ہوا ہے ، بات ہورہی تھی ایم بی ایس کیوں پاکستان سے ناراض ہے، پاکستان نے کون سی گائے سعودی عرب کی چرا لی ہے، شاہ محمود قریشی نے بالکل صحیح کاشف عباسی کے پروگرام میں موقف اختیار کیا، اگر اسلامی تنظیم کشمیر پر سربراہی اجلاس نہیں بلاتی تو اس کا کیا فائدہ۔او آئی سی سعودی عرب نہٰں ہے اس کے 50سے زیادہ مسلم ممالک ممبر ہیں ہر ملک سعودی عرب کے اشاروں پر نہیں چل سکتا ہر ایک کو اظہار رائے کی آذادی ہے، آپ سے یمن تو سنبھالا نہیں جارہا، آپ پاکستان اور پاکستانی فوج کو دھمکی دے رہے ہیں جو ایک ایٹمی طاقت ہے جو بھارت جیسے ملک سے آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرتا ہے، آپ ہمیں چند سکے خیرات کے طور پر دیتے ہیں صرف سٹیٹ بینک میں رکھنے پر 5پرسنٹ سے زیادہ سود لیتے ہیں پھر اپنے آپ کو اسلامی ملک کہتے ہیں، اسلامی دفعات لاگو کرتے ہیں، گردن مارتے ہیں، ہاتھ کاٹتے ہیں اور پاکستان سے سود لیتے ہیں؟
کل سے پورے میڈیا میں پاکستان میں سفیر رہنے والے ڈاکٹر علی اسیری کے عرب نیوز میں چھپنے والے مضمون کا بڑا چرچہ ہے وہ سعودی عرب کے احسانات اس مضمون میں بتارہے ہیں بھائی چند خیرات کے سعودی ریال اور ادھار فالتو تیل دینے کے علاوہ کیا احسان ہیں میں ڈاکٹر اسیری کو پاکستان کے سعودی عرب پر احسانات بتاتا ہوں، ڈاکٹر اسیری تو پاکستان میں سفیر رہ کر گئے ہیں، ان کو یاد ہونا چاہیے کہ لائلپور کا نام بدل کر فیصل آباد کس ملک میں رکھا گیا محلہ شاہ فیصل کالونی کس ملک میں واقع ہے، محلہ سعود آباد کس ملک میں ہے، جب خانہ کعبہ پر باغیوں کا قبضہ ہو گیا تھا جب سعودی فوج قبضہ چھڑانے میں ناکام ہو گئی تھی تب کس ملک کی فوج نے وہ قبضہ چھڑایا تھا اور باغیوں کو گرفتار کیا تھا، پرویز مشرف کس ملک کا فوجی کمانڈر تھا جو آپریشن کی کمانڈ کررہا تھا، راحیل شریف کس ملک کا سابق فوجی سربراہ ہے جو اس وقت بھی سعودی عرب میں بیٹھا ہوا ہے اور یمن سے حوثی باغیوں کے حملے سے سعودی عرب کو بچا رہا ہے راحیل شریف نہ امریکی ہے نہ اسرائیل یا متحدہ امارات کا فوجی افسر ہے وہ پاکستان کا آرمی چیف رہا ہے اور ڈالر کمانے سعودی عرب نہیں گیا ہے وہ چاہتا تو پاکستان میں مارشل لاء لگا کر حکومت کر سکتا تھا لیکن وہ محب وطن جنرل ہے اس کے خاندان میں میجر شہید شریف نشان حیدر جیسا شہید موجود ہے وہ اس بہادر بھائی کا بھائی ہے جو ملک کی خاطر شہید ہونا فخر سمجھتے ہیں اس خاندان کو ڈالروں یا سعودی ریالوں کی لالچ نہیں ہوتی وہ کعبہ شریف اور روضہ رسول کی حفاظت کیلئے سعودی عرب میں موجود ہیں ڈاکٹر علی اسیری آپ کیا سعودی عرب کے پاکستان پر احسانات گنوا رہے ہیں پاکستان کے سعودی عرب پر احسانات زیادہ ہیں یاد کریں کویت عراق جنگ جب پاکستانی فوج مکہ اور مدینہ منورہ کی حفاظت کیلئے سعودی عرب پہنچ گئی تھی ہم نے آپ سے ڈالر نہیں مانگے تھے، ہم نے آپ کی حفاظت کا ذمہ لیا ہوا ہے آپ کی فوج اور طیارے ہمیں بھارت سے آ کر نہیں بچاتے بھارت نے بالاکوٹ پر فضائی حملہ کیا آپکی فوج پاکستان نہیں آئی آپ بھارت سے 60ارب ڈالر کی ڈیل کررہے تھے وہاں آئل ریفانری لگارہے ہیں کشمیریوں کا خون آپ کو نظر نہیں آتا، کشمیری عورتوں کی عصمت دری کی ویڈیو آپ کو دکھائی نہیں دیتی 5اگست 2019ء سے 5اگست 2020ء تک کتنے کشمیری شہید ہوئے آپ کو نہیں پتہ، سکیورٹی کونسل میں کتنی دفعہ مسئلہ کشمیر ڈسکس ہوا سعودی عرب کو نہیں پتہ، یہ پاکستان بھارت کا اندرونی مسئلہ ہے، بابری مسجد شہید ہو گئی، اس کی جگہ رام مندر کی بنیاد آپ کے دوست مودی نے رکھ دی وہ ڈاکٹر علی اسیری! آپ کو دکھائی نہیں دیتا وہ بھارت کا اندرونی مسئلہ ہے، مسلمانوں کا مسئلہ نہیں ہے آپ اسلام کے ٹھیکیدار بنے ہوئے ہیں، خانہ کعبہ کی چابیاں آپ کے پاس ہیں OICکا ہیڈ کوارٹر جدہ میں ہے، شاہ محمود قریشی نے بالکل صحیح بات کی ہے آپ پاکستان کا کیا بگاڑ سکتے ہیں صرف اپنے پیسے مانگ سکتے ہو وہ آپ نے مانگ لئے، ایک ارب ڈالر آپ کو واپس کر دئیے گئے آپ نے لے لئے، آپ ایک ارب ڈالر کے بغیر بھوکے مررہے تھے، آپ روز 30لاکھ پاکستانیوں کو نکالنے کی دھمکی دیتے ہو، آپ کا ملک رک جائے گا، پاکستان تو گزارہ کر لے گا، پانچ ارب ڈالر کی Remittenceکے بغیر بھی، ایٹمی دھماکے کے وقت دنیا کا مقابلہ کر چکا ہے اب اس وقت ترکی، ایران اور چائنہ ہمارے ساتھ ہیں، ہمیں آپ خیرات اور پاکستانیوں کو نکلانے کی دھمکیاں مت دیں، ہمارا گزارہ سعودی عرب اور یو اے ای کے بغیر بھی ہو جائیگا، آپ کا گزارہ ڈاکٹر علی اسیری نہیں ہو گا، آپ ہمیں ڈالروں اور ادھار تیل کی دھمکی دینا بند کریں، ایران ہمیں ادھار تیل دے دیگا، آپ بھول گئے امریکی کمپنیاں مفت تیل دے رہی تھیں ساتھ میں رکھنے کے پیسے بھی دے رہی تھیں، پاکستان ہمیشہ برابری کی بنیاد پر سعودی عرب کی عزت کرتا ہے اور کرتا رہے گا، ہم امید کرتے ہیں کہ محمد بن سلمان تاریخ پر نظر ڈالیں گے اور اپنے ملک کو عالم اسلام کی رہنمائی کیلئے استعمال کریں گے تاکہ محبتوں اور احترام کا رشتہ ہمیشہ پاکستان کیساتھ برقرار رہے۔