اسرائیل، متحدہ عرب امارات امن معاہدہ بیت المقدس سے غداری ہے، فلسطین

223

یروشیلم: اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان امن معاہدے پر فلسطین کا سخت ردعمل سامنے آگیا ہے، فلسطین نے معاہدے کو مسترد کرتے ہوئے اسے فلسطینی عوام، بیت المقدس اور مسجد القصیٰ سے غداری قرار دیا ہے۔

فلسطینی حکام نے متحدہ عرب امارات سے اپنا سفیر بھی واپس بلا لیا ہے جبکہ ترکی نے بھی سخت ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ تاریخ اور خطے میں بسنے والے لوگوں کا ضمیرمنافقانہ رویے کو فراموش نہیں کرے گا اور نہ ہی معاف کرے گا۔

ترکی کے دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ تاریخ فلسطینی عوام اور ان کی جدوجہد کے ساتھ دھوکہ کرنے والوں کو شکستہ حال دیکھے گی۔

دوسری جانب ایرانی وزارت خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ فلسطین کے مظلوم عوام اور دنیا کی تمام آزاد قومیں غاصب اسرائیلی حکومت کے ساتھ تعلقات بحالی کو کبھی معاف نہیں کریں گی۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان ایک تاریخی امن معاہدہ طے پاگیا جس بعد مشرقی وسطیٰ کے دونوں اہم ملکوں کے درمیان سفارتی تعلقات معمول پر آسکیں گے۔