پاکستان سے محبت، ڈراموں اور فلموں میں کام کرنے کی خواہش ہے: ارطغرل

195

لاہور:ترکی کے شہرہ آفاق ڈرامے ’دیریلیش ارطغرل‘ جسے اردو میں ‘ارطغرل غازی’ کہا جاتا ہے، ڈرامے کے مرکزی کردار ہیرو انجین التان دوزیتان (ارطغرل) نے پاکستانی ڈراموں اور فلموں میں کام کرنے پر دلچسپی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہمارا برادر ملک ہے، بچپن پاکستان سے محبت کے اظہار میں گزارا۔ محبت کا قرض بھی اتارنے کی کوشش کروں گا۔

تفصیلات کے مطابق پی ٹی وی پر نشر ہونے والے 16 منٹ کے انٹرویو میں انہوں نے اپنی طرز زندگی سمیت پاکستان اور عوام سے متعلق دلچسپ گفتگو کی۔

یاد رہے کہ استنبول کے شہر ازمیر میں 1979 میں پیدا ہونے والے انجین التان دوزیتان یعنی ارطغرل نے بتایا کہ انہوں نے مقامی یونیورسٹی کے شعبہ فلم و تھیٹر سے گریجویشن کی اور پھر استنبول میں ہی مستقل رہائش پذیر ہوئے۔

انجین التان نے اپنی شخصیت سے متعلق سوال میں کہا کہ ان دنوں وہ اہلخانہ کے ہمراہ وقت گزار رہے ہیں اور انہیں اہلخانہ کے ساتھ وقت گزارنا بہت پسند ہے۔

نئے پراجیکٹ سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ وہ ایک سرپرائز پراجیکٹ ہے جس کے بارے میں معلومات شیئر نہیں کرسکتا۔

علاوہ ازیں انجین التان دوزیتان نے بتایا کہ ماضی قریب میں ایک ڈاکیومینٹری بنانے کا سلسلہ کیا تھا جو جاری ہے، ماحولیات سے متعلق اس ڈاکیومینٹری کو جلد نمائش کے لیے پیش کیا جائے گا۔

انجین التان دوزیتان نے اپنے بارے میں بتایا کہ وہ کسی بھی ڈرامے یا فلم کو بار بار نہیں دیکھتے لیکن ڈرامہ ارطغرل غازی کے ریکارڈنگ کے دوران اپنی کارکردگی کو بہتر بنانے کے لیے متعدد مرتبہ دیکھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ارطغرل غازی کا پراجیکٹ مکمل ہونے کے بعد میں وقت کی کمی کے باعث اسے دوبارہ نہیں دیکھ سکا بلکہ دیگر نئے پراجیکٹ میں مصروف ہوگیا۔