افغانستان: جلال آباد جیل پر داعش کا حملہ، 29 افراد ہلاک، 8 حملہ آور بھی مارے گئے

215

کابل:افغانستان کے شہر جلال آباد میں جیل پر داعش کے حملے میں 29 افراد ہلاک جبکہ افغان سکیورٹی فورسز نے 18 گھنٹوں کی لڑائی کے بعد 8 حملوں کو آور کو مار ڈالا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان جیل پر کیے گئے حملے کے دوران سکیورٹی فورسز اور داعش کے جنگجوؤں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں 29 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

افغان خبر رساں ادارے ’طلوع نیوز‘ کے مطابق 18 گھنٹوں کی لڑائی کے بعد افغان سکیورٹی اہلکاروں نے داعش کے 8 حملوں کو مار ڈالا ہے اور آپریشن مکمل کر لیا ہے۔

ننگر گورنر ہاؤس کے ترجمان عطاء اللہ کا کہنا ہے کہ اس حملے میں 29 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ 50 کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔

وزارت دفاع کے ترجمان فواد امان کا کہنا ہے کہ آپریشن مکمل کر لیا گیا ہے۔

طلوع نیوز کے مطابق حملے کے بعد افغانستان کے آرمی چیف جنرل ضیاء یٰسین بھی حملے کی جگہ پہنچے اور حالات کا جائزہ لیا۔

دوسری طرف افغان طالبان کی طرف سے اس حملے کی تردید کی گئی ہے۔

طالبان کے سیاسی ترجمان سہیل شاہین نے امریکی خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا کہ جلال آباد حملے کے پیچھے ان کا گروپ ملوث نہیں ہے۔ ہم نے جنگ بندی کی ہے اور ہم ملک میں اس طرح کے کسی بھی حملے میں ملوث نہیں۔

علاوہ ازیں طالبان نے جمعرات کی رات میں مشرقی صوبے لوگر میں ہونے والے خودکش حملے میں ملوث ہونے کی تردید کی۔

واضح رہے کہ اس حملے نے عید الاضحیٰ کے موقع پر افغان سیکیورٹی فورسز اور طالبان کے درمیان ہونے والے جنگ بندی کے سکون کو ختم کردیا۔