جوبائیڈن کا ایک بار پھر مسلمانوں پر پابندیاں ہٹانے،کابینہ میں شامل کرنے کا اعلان

276

واشنگٹن:امریکی ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ایک مرتبہ دوبارہ اپنے وعدے کو دہراتے ہوئے کہا ہے کہ اگر وہ صدارتی انتخاب جیت گئے تو صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے سات مسلم ممالک کے تارکین وطن کے ملک میں داخلے پر پابندی کے حکمنامے کو ختم کر دیں گے اور اپنی کابینہ میں مسلم اراکین کو شامل کروں گا۔

 جو بائیڈن نے امریکی صدر ٹرمپ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سات مسلم ممالک کے افراد پر امیگریشن کی پابندی عائد کرنا اختیارات کا ناجائز استعمال ہے۔

واضح رہے کہ صدر ٹرمپ نے 7 مسلم اکثریتی ممالک سے آنے والے تارکین وطن کے ملک میں داخلے پر پابندی عائد کی تھی جبکہ اس اقدام کے متعلق جو بائیڈن اور دیگر ناقدین نے کہا تھا کہ مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا گیا ہے۔

ایک وفاقی عدالت نے ابتدائی پابندی کے حکمنامے کو مسترد کر دیا تھا لیکن 2018ء میں سپریم کورٹ نے ایک ترمیم شدہ فیصلہ کو برقرار رکھا۔

یاد رہے کہ رواں برس اپریل میں بھی صدر ٹرمپ نے دو ماہ کے لیے ملک میں امیگریشن پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا تھا۔

جو بائیڈن کا ویڈیو بیان میں کہنا تھا کہ اگر میں صدر بنا تو پہلے ہی دن مسلم تارکین وطن پر عائد پابندی ختم کر دوں گا۔

کورونا وائرس کی وبائی بیماری کے دوران جمعہ کا اجتماع صدر ٹرمپ کا تازہ ترین اجتماع تھا جس کے ذریعے وہ نومبر میں ہونے والے انتخابات سے قبل اپنے حامیوں میں جوش بھرنے کی کوشش کر رہے تھے۔