لیلیٰ شہزادہ: رنگوں سے سجی ہوئی یاد

242

پاکستان کی نام ور مصورہ لیلیٰ شہزادہ کی برسی منائی گئی۔ 20 جولائی 1994 کو ان کی زندگی کا باب ہمیشہ کے لیے بند ہو گیا۔ انھوں نے فنِ مصوری میں سندھ کی تہذیب اور مقامی ثقافت کو اپنا موضوع بنایا۔ انھیں تجریدی آرٹ کے حوالے سے بھی پہچانا جاتا ہے۔

لیلیٰ شہزادہ 1925 میں انگلستان میں لٹل ہیمپٹن میں پیدا ہوئیں۔ انھوں نے ڈرائنگ سوسائٹی، لندن سے مصوری سیکھی۔ 1958 سے 1960 کے دوران انھیں مشہور مصور اے ایس ناگی سے اس فن کی تربیت حاصل کرنے کا موقع ملا۔

لیلیٰ شہزادہ نے 1960 میں کراچی میں اپنے فن پاروں‌ کی پہلی انفرادی نمائش منعقد کی۔ انھوں نے اپنے فن پاروں‌ کی بدولت جلد ہی آرٹ کے قدر دانوں اور ناقدین کو اپنی طرف متوجہ کر لیا اور بعد پاکستان کے مختلف شہروں اور بیرونِ ملک بھی ان کے کام کی نمائش ہوئی۔

پاکستان میں‌ انھیں تمغہ امتیاز اور تمغہ حسنِ کارکردگی سے نوازا گیا جب کہ بیرونِ ملک بھی ان کے کام کو سراہا گیا اور انھوں نے مختلف اعزازات اپنے نام کیے۔ 2006 میں پاکستان پوسٹ نے‌ لیلیٰ شہزادہ کے حوالے سے یادگاری‌ ٹکٹ کا اجرا بھی کیا۔