11 نومبر 1975 کو آسٹریلیا کی سیاسی تاریخ کے ڈرامائی باب کے طور پر کیوں دیکھا جاتا ہے؟

248

11 نومبر 1975 کو آسٹریلیا کی سیاسی تاریخ کے سب سے ڈرامائی باب کے طور پر دیکھا جاتا ہے، جب ایک گورنر جنرل نے ایک منتخب وزیراعظم کو برطرف کرکے اس کی حکومت تحلیل کر دی۔

آسٹریلوی وزیراعظم گوف وٹلہم سحرانگیز شخصیت کے مالک اور ایک ترقی پسند رہنما تھے جو 18 مہینے پہلے بھاری اکثریت سے دوسری بار منتخب ہوکر اقتدار میں آئے تھے، اس سے قبل گورنر جنرل کو ملکہ برطانیہ کے نمائندے کی حیثیت سے محض ایک علامتی عہدیدار سمجھا جاتا تھا۔

اس ڈرامائی موڑ پر پارلیمنٹ کے باہر تقریر میں وٹلہم نے کہا کہ خدا ملکہ برطانیہ کی حفاظت کرے کیونکہ گورنر جنرل کو تو اب کوئی نہیں بچا سکتا وہ اپنی ساری زندگی اپنے خلاف ہونے والی سازش پر آواز بلند کرتے رہے۔

وزیراعظم وٹلہم کی برطرفی کو شک کی نگاہ سے دیکھا گیا، جس پر وٹلہم کے حامیوں نے بھرپور احتجاج کیا اورگورنر جنرل جون کرکو تارِیخی حقائق مسخ کرنے اور عوام کو گمراہ کرنے کے الزامات کا سامنا رہا۔

ان ہی حقائق کی کھوج اور تجسس نے آسٹریلوی مورخ جینی ہوکنگ کو تحقیق پر اکسایا، قومی محافظ خانے میں جمع کرائی گئی یادداشتوں نے گورنر جنرل جون کر کی وزیراعظم گوف وٹلہم کے خلاف سازش کا بھانڈا پھوڑ دیا۔