مستقبل کی اسکائی ٹنلز کیا ہیں؟

215

انسانی آبادی میں تیزی سے اضافے کے باعث جوں جوں مسائل بڑھ رہے ہیں ویسے ہی ٹیکنالوجی کی ترقی ان مسائل کا حل بھی پیش کرتے ہوئے نظر آرہی ہے۔

یوکرائن ایک وکیل نے اسکائی ٹنلز کا طریقہ پیش کیا ہے جو ٹریفک کی بھیڑ میں پھنس گئے تھے۔ اسکائی ٹنلز  سے ٹریفک متاثر نہیں ہوگی اور متبادل انفراسٹرکچر کم وقت میں کھڑا کیا سکےگا۔

سڑکیں کھودنا، کئی کئی ماہ تک شاہراہیں بند کرکے ٹنلز اور فلائی اوور بنانے کا نظام اب پرانہ ہوچکا ہے۔ اب اسکائی ٹنلز ٹیکنالوجی کے ذریعہ  آرام سے سڑکوں کے اوپر فلائی اوورز اور انفراسٹرکچر کھڑا کیا جاسکتا ہے۔

اسکائی ٹنلز سے نہ تو ٹریفک جام ہوگی نہ ہی کسی کا وقت ضائع ہوگا۔ جدید ٹیکنالوجی کے ذریعہ بنے بنائے سمینٹ کے بلاکس رکھ کر فلائی اوورز بنائے جاسکتے ہیں۔

اس سسٹم سے روایتی طریقوں سے ہٹ کر بہترین انفراسٹرکچر کم وقت میں تعمیر کیا جاسکتا ہے۔ اسکائی ٹنل بنانے کیلئے بنے بنائے بلاکس لائے جائیں گے اور انہیں کرین کے ذریعے ایڈجسٹ کردیا جائے گا۔ اس سے کسی حادثے کا بھی امکان نہیں اور ٹریفک کی روانی کو بھی برقرار رکھا جاسکے گا۔