چین: کوئلے کی کان بیٹھنے سے 4 مزدور ہلاک، درجنوں لاپتا

82

 

چین کے شمالی علاقے میں کوئلے کی کان میں مٹی کی چٹان گرنے سے ہلاکتوں کی تعداد 4 ہوگئی جبکہ درجنو ں لاپتا مزدوروں کی تلاش کا عمل جاری ہے۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘ کے مطابق چین کے شمالی علاقے میں کوئلے کی کان میں مٹی کی بھاری چٹان گرنے سے ہلاکتوں کی تعداد 4 ہوگئی ہے جبکہ لینڈ سلائیڈ کی وجہ سے ریسکیو عمل تاخیر کا شکار رہنے کے بعد دوبارہ شروع ہوگیا ہے جہاں متعدد مزدوروں کی تلاش جاری ہے۔چین کی سرکاری میڈیا سی سی ٹی وی کے مطابق ملک کے منگولیا علاقے الکسا لیفٹ بینر میں ایک کوئلے کان میں 180 میٹر اونچی چٹان گرنے سے 50 سے زائد کان کن وہاں پھنس گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق دور راز سائٹ پر سیکڑوں ریسکیو اہلکاروں کو بھیجا گیا مگر بعد میں ایک اور لینڈ سلائیڈ نے دن بھر کوئلے کان میں پھنسے مزدوروں کو ریسکیو کرنے میں عارضی رکاوٹیں پیدا کردیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریسکیو اہلکاروں نے تمام رکاوٹیں ہٹاکر کان کنوں کو نکالنے کی کوششیں شروع کردی ہیں جہاں کم از کم چار افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ 6 زخمی اور 49 ابھی تک لاپتا ہیں۔چین کی سرکاری میڈیا کے فوٹیج میں ریسکیو اہلکاروں کو نارنجی رنگ کے ملبوسات اور پیلے رنگ کے ہیلمٹ میں دیکھا جا سکتا ہے جو ملبے کے ڈھیر کے درمیان کھڑے ہیں اور کھدائی کرنے والی مشینری ملبے کو ہٹانے میں مصروف ہیں۔