یہ نہ تھی ہمای قسمت!

283

زندگی میں بہت کم انسان کو ایسا موقع ملتا ہے جو کہ اس کی زندگی کو پوری طرح بدل سکتا ہے اور بعض لوگوں کی پوری زندگی موقع کی امید میں ہی گزر جاتی ہے لیکن موقع ملتا ہی نہیں ہے لیکن آپ جانتے ہیں کہ موقع نہ ملنے سے زیادہ برا کیا ہوتا ہے؟؟ وہ ہے موقع مل کر اُسے کھو دینا اور یہ نہیں سمجھنا کہ یہ زندگی کا سب سے بڑا موقع تھا!!
کبھی کبھی ایسا ہوتا ہے کہ بہت بڑا ہاتھ آیا موقع انسان کھو دیتا ہے اور جو کوئی اس بارے میں سنتا ہے حیران ہوتا ہے ایسا کیسے ہو گیا؟؟
گیارہ سال پہلے Laszlo Hanyeczنامی ایک صاحب تھے جنہوں نے دس ہزار بٹ کوائنز کے دو پیزا آرڈر کئے تھے، جی ہاں صرف دو پیزا کیلئے یہ بٹ کوائنز دئیے تھے! اگر اس جملے سے آپ حیران ہو رہے ہوں تو ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ دس سال میں یعنی 2010ء سے آج تک کے بیچ میں یہ دوپیزا کیلئے ادا کئے ہوئے بٹ کوائنز کی ویلیو چھ بلین ڈالر پہنچ گئی ہے۔ جی بالکل اگر آج آپ کے پاس دس ہزار بٹ کوائنز ہوں تو وہ 6بلین ڈالر کی قیمت رکھتے ہیں۔
Laszloکے ڈیفنس میں کہا جا سکتا ہے بلکہ شاید کہا بھی جاتا ہے کہ اگر وہ ایسا نہ کرتے تو بٹ کوائنز کو یہ کامیابی ملتی ہی نہیں، یہی وہ پہلے شخص بھی تھے جنہوں نے بٹ کوائن کو دنیا میں کسی بھی Transactionکیلئے پہلی بار استعمال کیا۔ آج بھی اگر آپ 10,000بٹ کوائن گوگل پر سرچ کریں تو آپ کو Laszloکی بیٹی کی تصویر ملتی ہے جو کہ ایک سال کی بچی ہے اور ساتھ ہی ان دو پیزا بھی ساتھ رکھے ہیں جو دس ہزار بٹ کوائن کے تھے۔
افسوس یہ نہ تھی Laszloکی قسمت کہ وہ دس ہزار کے بٹ کوائن ہولڈ کر کے آج چھ بلین ڈالرز کما سکتا تھا۔
Steve jobsاور Stevo Wogکو کون نہیں جانتا، applie incکو بنانے والے اور چلانے والے دونوں ہلی ’’Steve‘‘دنیا کے سب سے بڑے سلیبرٹیز مانے جاتے ہیں۔ اسٹیو جابس کو دنیا سے گئے دس سال ہو گئے لیکن بچہ بچہ آج بھی ان کو جانتا ہے لیکن کیا آپ Ronnald wayneکو جانتے ہیں؟؟ شائد نہیں، یہ ایپل کمپنی بنانے والے تیسرے فائونڈر تھے، ان تین لوگوں نے ایپل کمپنی بنائی تھی اور رونلڈ وائن نے خود اپنے ہاتھوں سے اس کمپنی کا پہلا logoبنایا تھا لیکن پھر انہیں لگا کہ یہ کمپیوٹر کا بزنس اتنا منافع بخش نہیں ہے جتنا ان کا old coin tradingکا بزنس اس لئے انہوں نے اسٹیو جابس سے کمپنی شروع ہونے کے دس دن بعد ہی کہہ دیا کہ میں کمپنی سے الگ ہونا چاہتا ہوں، رونلڈ اسوقت اکتالیس سال کے تھے اور اسٹیوز بیس بیس سال کے رونلڈ تو اٹاری کمپنی میں تین سال کام بھی کر چکے تھے اور کمپیوٹرز کے بارے میں کافی کچھ جانتے تھے اور سمجھتے تھے۔
اسٹیو نے رونلڈ کو کمپنی میں اس لئے رکھا تھا کہ اگر اسٹیو اور وورز میں کسی معاملے پر کسی مدد کی ضرورت ہو کمپیوٹرز کے سلسلے میں تو رونلڈ مددگار ثابت ہو۔
رونلڈ کے تجربہ کار ہونے کی وجہ سے کمپنی کی پارٹنر شپ کا پہلا کانٹریکٹ بھی رونلڈ نے لکھا تھا، ان سب باتوں کو دیکھتے ہوئے کمپنی کا CEOبھی رونلڈ ہی کو بننا تھا لیکن پھر وہی بات کہ یہ نہ تھی ہماری قسمت ۔رونلڈ اپنے 10%شیئرز یعنی 800$کو بیچ کر کمپنی سے الگ ہو گیا وہ 10%شیئرز جو آج کی تاریخ میں 95بلین ڈالرز ویلیو رکھتے ہیں۔
1998میں Larry pageاور sergei biinدو طالب علم تھے جو اپنی کمپنی بیچنا چاہتے تھے، کمپنی تھی ایک سرچ انجن جو خود ان کا بنایا پیج رینک سسٹم استعمال کرتی تھی یعنی آپ انٹرنیٹ پر جو بھی کی ورڈ سرچ کریں آپ کو بیچ رینک کی مدد سے سرچ رزلٹ دیا جائے گا، یہ دونوں طلباء چاہتے تھے کہ اپنی کمپنی کو ایک ملین میں بیچ دیں تاکہ تمام تر توجہ اپنی سٹڈیز پردیں، پہلے وہ 1998کے مشہور سرچ انجن Alta Vistaکے پاس گئے لیکن انہوں نے ’’نہ‘‘ بول دیا پھر وہ Yahooکمپنی کے پاس گئے انہوں نے بھی انکار کر دیا، اس انکار کے بعد انہوں نے خود اپنی کمپنی لانچ کر لی تھا جس کا نام Google.comتھا۔
2002ء میں Yahooنے اپنی غلطی کو سمجھتے ہوئے گوگل کو خریدنے کی آفر تین بلین ڈالردی لیکن گوگل کی ڈیمانڈ اب پانچ بلین ڈالر تھی جس پر ایک بار پھر اسے NOکا سامنا کرنا پڑا جس کے بعد 2008ء میں Yahooنے نو بولا مائیکروسافٹ کو جو ان کو 40بلین ڈالرز کی آفر دے رہے تھے، اس کے بعد Verigonنے Yahooنے Googleکو ڈالر 1ملین کا خرید لیا ہوتا یا پھر 2002میں ڈالر 5بلین کا تو شاید Yahooاور گوگل ملا کر ایسی طاقتور کمپنی ہوتی جسکی آج تک دنیا میں مثال نہیں ملتی لیکن یہ نہ تھی Yahooکی قسمت!!!