T.20کپ میں بھارت کی عبرت ناک شکست، نیوزی لینڈ بھی ہا ر گئی…ویلڈن پاکستان

135

24اکتوبر کو دبئی میں T.20ورلڈ کپ میں جو ہوا اسکو پاکستان بھی ہمیشہ یاد رکھے گا اور بھارت ٹیم تو شائد اس شکست کو اپنے منھ پر کالک لگا کر یاد رکھے گی۔ ایسی عبرت ناک اور تاریخ ساز شکست جو کوہلی اور اسکی ٹیم مدتوں بھلا نہیں پائے گی۔ اس میچ کو اگر تاریخ ساز کہا جائے تو بیجانہ ہو گا۔ پاکستان کی ٹیم کو بہت انڈر اسٹیمیٹ کیا جارہا تھا۔ ہر شخص یہی کہہ رہا تھا کہ بھارت آسانی سے یہ میچ جیت جائیگا۔ خاص طور سے بھارتی میڈیا تو پاگل تھا۔ ان کے جتنے نیوز چینل تھے وہ سب پاکستان کو دوسرے درجے کی ٹیم قرار دے رہے تھے۔ پاکستان آج تک کسی بھی ورلڈ کپ میں بھارت سے نہیں جیتا تھا۔ تاریخ میں پاکستان کو کسی بھی ورلڈ کپ بھارت پر فتح نہیں حاصل ہوئی تھی۔ اس پس منظر میں لوگ یہاں تک کہ پاکستانی میڈیا بھی بھارت کو فیورٹ قرار دے رہا تھا لیکن دو شخص بہت مطمئن اور پرامید تھے۔ ایک عمران خان دوسرا کپتان بابراعظم۔ عمران خان نے وزیراعظم ہائوس میں بلا کر جس طرح ٹیم کو نصیحت کی تھی خاص طور سے نیوزی لینڈ کی ٹیم کے واپس بھاگ جانے کے بعد ،کہ دیکھوہمت نہیں ہارنا ہے لڑنا ہے اگر ہارنا بھی ہے تو لڑ کر ہارنا ہے اگر آپ نے جیت پر نظر رکھی تو یقینا کامیابی آپ کا مقدر ہو گی۔ ہار جیت تو ہر میچ میں ہوتی ہے ایک ٹیم جیتتی ہے ایک ٹیم ہارتی ہے لیکن اگر ٹیم ذہنی طور پر ہار جائے کہ ہم جیت ہی نہیں سکتے تو وہ ٹیم کبھی نہیں جیتتی۔ عمران خان نے ساری عمر اسی نظریہ پر عمل کیا۔ اس نے کبھی بھی ہار نہ مانی۔ 92ورلڈ کپ میں پاکستان بالکل آخر کونے پر پہنچ گیا تھا لیکن پھر حالات نے پلٹا کھایا اور پاکستان ورلڈ کپ جیت کرآیا۔ پاکستان کے لئے یہ تاریخ ساز ورلڈ کپ تھا۔ دنیا نے دیکھا عمران خان فاتح ورلڈ کپ بن کر آیا اور آج تک پاکستان کا کوئی بھی کپتان دوبارہ ورلڈ کپ نہیں جیت سکا۔
اس میچ میں بھارت کیساتھ کھیلتے ہوئے پاکستان ٹیم نے 7 ریکارڈ قائم کئے جو مدتوں لوگوں کو یاد رہیں گے اور شائد مشکل سے ٹوٹیں۔ پہلا ریکارڈ پاکستانی ٹیم کی ورلڈکپ میں 152کی پہلی وکٹ کی پارٹنر شپ، دوسرا ریکارڈ بھارت T.20میں پہلی مرتبہ دس وکٹوں سے ہارا۔ تیسرا ریکارڈ پاکستان پہلی مرتبہ T.20ورلڈ کپ میں دس وکٹوں سے جیتا۔ چوتھا ریکارڈ کسی بھی وکٹ کی پارٹنر شپ میں بھارت کے خلاف 152رنز کی پارٹنر شپ، پانچواں ریکارڈ پاکستان کے بیٹسمینوں نے 2013ء کا آسٹریلیا کا بھارت کے خلاف کسی بھی وکٹ کی پارٹنر شپ کا 133رنز کا ریکارڈ توڑا، چھٹاریکارڈ کسی بھی ورلڈ کپ میں بھارت کیخلاف پہلی فتح، ساتواں ریکارڈ نائب کپتان محمد رضوان نے اس میچ میں اپنے سو کیچز مکمل کئے۔ یہ ہیں تاریخ ساز ریکارڈ جس کو بھارت ہمیشہ یاد رکھے گا۔
اس میچ کے بعد پوری دنیا خاص طور سے بھارتی عوام اور میڈیا نے یہ دیکھا کہ مقبوضہ کشمیر میں پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے گئے۔ پاکستان کا جھنڈا لہرایا گیا۔ لوگوں نے آتشبازی کا مظاہرہ کیا۔ اس کے جواب میں مودی سرکاری کی ہندو عوام نے مسلمان بھارتی بائولر محمد شامی کا مذاق اڑایا۔ اسکو پاکستانی ایجنٹ کہا کہ اس نے جان بوجھ کر اتنے رن دئیے تاریخ گواہ ہے بھارتی ٹیم میں جب جب کوئی مسلمان کھلاڑی کھیل کھیلتا ہے تو اس کے خلاف ہندو اسی طرح کی ہی باتیں کرتے ہیں۔ محمد شامی کے خلاف میڈیا پر اس طرح کا پروپیگنڈاکرنے پراویسی نے ٹھیک ٹھاک جواب دیا۔ محبوبہ مفتی اور عمرعبداللہ نے بھی اس کا ساتھ دیا اور کہا کہ یہ مسلمانوں کے خلاف نفرت ہے جو آر ایس ایس کے غنڈے زہر اُگل رہے ہیں۔ محمد شامی بالکل چور بن گیا ہے۔ جیسے اس نے کوئی گناہ کر لیا ہے۔ یہ تاریخ میں پہلی بار نہیں ہوا ہے ہر دور میں ہوتا رہا ہے۔مودی کی نفرت مسلمانوں سے عیاں ہے وہ مسلمانوں کو دوسرے درجے کا شہری سمجھتا ہے۔ گجرات میں اس نے ہزاروں مسلمانوں کو قتل کیا۔ پاکستان سے اس کی نفرت عیاں ہے۔ وہ پاکستان کو کمزور کرنا چاہتا ہے لیکن جب تک افواج پاکستان اور پاکستان کا ایک بھی شہری زندہ ہے اسکا یہ خواب شرمندہ تعبیر نہیںہو گا۔
تازہ ترین شکست نیوزی لینڈ کی بھی ہے ان لوگوں کے دماغ کی گرمی بھی نکل گئی ہے۔ وہ اپنے آپ کوفرعون سمجھ بیٹھے تھے کہ پاکستان کی ٹیم کوئی دوسرے درجے کی ٹیم ہے لیکن دوبئی میں ان کی شکست نے ان کا دماغ درست کر دیا ہے پاکستان ٹیم کے سامنے ابھی کئی اہم میچز ہیں ان کو سرجھکا کر اور ذمہ داری سے اپنے سارے میچز کھیلنے چاہئیں ان کے سامنے T.20کا ورلڈ کپ ہے اور انشاء اللہ وہ یہ کپ جیت کر ہی آئیں گے۔