طالبان نے افغانستان میں خواتین کے کھیلوں پر پابندی لگا دی

375

آسٹریلیا کے ایس بی ایس ٹی وی نے ایک طالبان ترجمان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں خواتین کے کھیلوں اور خاص طور پر خواتین کی کرکٹ پر طالبان کی طرف سے پابندی عائد کی جائے گی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے اے پی کی رپورٹ کے مطابق طالبان کے ثقافتی کمیشن کے ڈپٹی ہیڈ احمد اللہ واثق کا حوالہ دیتے ہوئے ادارے کا کہنا تھا کہ ‘کرکٹ میں انہیں ایسی صورت حال کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جہاں ان کے چہرے اور جسم کو ڈھانپا نہ جاسکے، اسلام خواتین کو اس طرح دیکھنے کی اجازت نہیں دیتا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘یہ میڈیا کا دور ہے اور وہاں تصاویر اور ویڈیوز ہوں گی اور پھر لوگ اسے دیکھتے ہیں، اسلام اور امارت اسلامی خواتین کو کرکٹ کھیلنے یا اس قسم کے کھیل کھیلنے کی اجازت نہیں دیتی جہاں وہ بے نقاب ہوں’۔

احمد اللہ واثق نے گزشتہ ماہ ایس بی ایس کو بتایا تھا کہ طالبان مردوں کی کرکٹ کو جاری رکھنے کی اجازت دیں گے اور انہوں نے مردوں کی قومی ٹیم کو نومبر میں ٹیسٹ میچ کے لیے آسٹریلیا جانے کی منظوری بھی دے دی ہے۔