پاکستان، برطانوی سفری پابندی کی ‘ریڈ لسٹ’ میں برقرار

139

لندن: پاکستانی ہائی کمیشن اور پاکستانی نژاد اراکین پارلیمان کی کئی ہفتوں کی لابنگ کے باوجود برطانوی حکومت کے سفری جائزے میں پاکستان کے لیے کوئی تبدیلی نہیں آئی اور وہ ریڈ لسٹ میں برقرار ہے۔

برطانوی حکومت کا فیصلہ پاکستان سے آنے والے مسافروں کے لیے دھچکا ثابت ہوگا جنہیں برطانیہ آنے پر ہوٹل میں 10 روز لازمی قرنطینہ کرنا ہوگا جس کی لاگت 2 ہزار 250 پاؤنڈز ہے۔

مانچسٹر گورٹن شیڈو کے لیبر رکن پارلیمنٹ اور ہاؤس آف کامنز کے ڈپٹی لیڈر افضل خان نے ایک ٹوئٹ میں ردِعمل دیتے ہوئے کہا کہ ’پاکستان کو ریڈ لسٹ میں برقرار رکھنے کے حکومتی فیصلے سے سخت مایوسی ہوئی’۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’ایسے میں کہ جب افغانستان میں بحران جاری ہے، پاکستان اہم انسانی امداد پہنچانے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے، اس فیصلے سے کئی لوگ پریشان ہوں گے اور انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا‘۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.