افغانستان: متضاد بیانات کے بعد طالبان کا خاشا زوان کے قتل کا اعتراف

282

طالبان نے متضاد بیانات کے بعد بالآخر افغانستان کے جنوبی صوبے قندھار میں گزشتہ دنوں قتل ہونے والے معروف مقامی کامیڈین نذر محمد المعروف خاشا زوان کے قتل کی ذمہ داری قبول کرلی۔

افغانستان میں طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے تصدیق کی کہ ویڈیو میں خاشا زوان کے گرد موجود 2 افراد طالبان جنگجو تھے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ دونوں افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے اور ان کے خلاف مقدمہ چلایا جائے گا۔

طالبان ترجمان نے الزام لگایا کہ صوبہ قندھار میں قتل کیے گئے نذر محمد خاشا، افغان نیشنل پولیس کے رکن تھے اور وہ طالبان کی ہلاکتوں اور ان پر تشدد میں بھی ملوث تھے۔

ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھا کہ خاشا زوان کو قتل کرنے کی بجائے انہیں طالبان کی عدالت کے سامنے پیش کیا جانا چاہیے تھا۔

نذر محمد المعروٖف خاشا ٹی وی پر مقبول شخصیت نہیں تھے لیکن وہ ٹک ٹاک پر اپنے روزمرہ کے معمولات پوسٹ کرتے تھے۔

وہ لطیفوں، مضحکہ خیز گانوں، خود کا مذاق اڑانے اور اکثر مداحوں کی طرف سے اٹھائے جانے والے موضوعات کا مذاق اڑانے کے حوالے سے جانے جاتے تھے۔

ان کے قتل نے افغانستان میں انتقامی حملوں کے خدشات کو بڑھا دیا ہے اور طالبان کی اس یقین دہانی کو بھی کمزور کر دیا ہے کہ حکومت کے لیے کام کرنے والے افراد، امریکی فوج یا تنظیموں کو کوئی نقصان نہیں پہنچایا جائے گا۔