ٹی ٹی پی کے افغان طالبان سے تعلقات برقرار ہیں، اقوام متحدہ

224

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (یو این ایس سی) کے لیے تیار کردہ ایک رپورٹ میں خبردار کیا گیا ہے کہ کالعدم عسکریت پسند گروپ تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے پاس افغانستان میں سرحد کے قریب 6 ہزار تربیت یافتہ جنگجو موجود ہیں۔

اقوام متحدہ کے ’تجزیاتی معاونت اور پابندیوں‘ کی نگرانی کرنے والی ٹیم کی 28ویں رپورٹ میں چین کے ساتھ افغانستان کی سرحد کے قریب بیجنگ مخالف سیکڑوں عسکریت پسندوں کی موجودگی کی تصدیق بھی کی گئی۔

رپورٹ کے ایک باب بعنوان ’غیر ملکی دہشت گردوں کے بارے میں طالبان کا نقطہ نظر‘ میں کہا گیا کہ غیر ملکی دہشت گردوں کا رحجان داعش اور ٹی ٹی پی کی طرف ہوسکتا ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ ’پی ٹی پی پر عائد آپریشنل پابندیوں کی وجہ سے طالبان اور گروپ کے مابین (مہلک) جھڑپیں ہوچکی ہیں۔