براڈ پٹ اور انجلینا جولی کی طلاق اور بچوں کی حوالگی کے کیس میں نیا موڑ

84

ہولی وڈ اداکار 57 سالہ براڈ پٹ اور 46 سالہ اداکارہ انجلینا جولی کے کئی سال سے جاری طلاق اور بچوں کی حوالگی کے کیس میں نئے موڑ آنے سے معاملات مزید الجھ گئے۔

دونوں کے درمیان 6 بچوں کی حوالگی اور ان کی طلاق کا کیس 2016 سے زیر سماعت ہے اور رواں برس مئی میں عدالت نے بچوں کی حوالگی سے متعلق براڈ پٹ کے حق میں فیصلہ دیا تھا۔

مئی 2021 میں عدالت نے تمام بچوں کی حوالگی اور پرورش مشترکہ طور پر کرنے کا حکم دیا تھا، اس سے قبل انجلینا جولی نے درخواست دی تھی کہ بچے صرف ان کے حوالے کیے جائیں۔

اگرچہ مئی میں عدالت نے ان کی بچوں کی حوالگی سے متعلق براڈ پٹ کے حق میں فیصلہ دیا تھا، تاہم تاحال دونوں کے درمیان قانونی طور پر طلاق نہیں ہوسکی، البتہ عدالت نے انہیں ’طلاق یافتہ‘ قرار دے رکھا ہے، تاکہ دونوں میں سے کوئی بھی نئی زندگی شروع کرنا چاہے تو کر سکتا ہے۔

لیکن اب ان کی طلاق اور بچوں کی حوالگی سے متعلق نیا موڑ آنے پر معاملہ مزید الجھ گیا۔

ریاست کیلی فورنیا کی اپیل کورٹ نے انجلینا جولی کی درخواست پر ان کی بچوں کی حوالگی کا فیصلہ سنانے والے ایک جج کو نااہل قرار دے دیا۔

رپورٹ کے مطابق انجلینا جولی کی درخواست پر عدالت نے فیصلہ سنانے والے جج جان ڈبلیو آرڈرکک کو خود سے متعلق حقائق خفیہ رکھنے پر نااہل قرار دیا، جس کے باعث ان کی جانب سے سنائے گئے فیصلے کی اہمیت پر سوال اٹھائے جا رہے ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.