افغانستان میں امن اب بھی قابل حصول ہے، پاکستان کی امریکا کو یقین دہانی

249

واشنگٹن: امریکا نے پاکستان پر زور دیا ہے کہ افغانستان میں استحکام لانے کے لیے ایک ‘تعمیری شراکت دار’ بنے جس پر اسلام آباد نے واشنگٹن کو یقین دہانی کروائی ہے کہ اس جنگ زدہ ملک میں امن اب بھی قابل حصول ہے۔

یو ایس انسٹیٹیوٹ آف پیس (یو ایس آئی پی) میں کووڈِ کے بعد ہوئے پہلی تقریب میں پاکستانی سفیر اسد مجید خان نے بھی امریکا اور چین پر زور دیا کہ جنوبی ایشیا میں امن اور استحکام کے فروغ کے لیے مل کر کام کریں۔

ادھر امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کسی بھی محاذ میں پاکستان کو ایک اہم شراکت دار قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ دونوں ممالک کے افغانستان کے امن و استحکام میں مشترکہ مفادات ہیں۔

امریکی عہدیدار نے 11 ستمبر تک افغانستان سے اپنے تمام فوجیوں کے انخلا کے فیصلے کا بھی دفاع کیا تھا اور کہا تھا کہ اب کابل کے ہمسایوں کے آگے آنے کا وقت ہے۔

انہوں نے کہا تھا کہ بہت طویل عرصے سے، افغانستان کے کچھ ہمسایہ ممالک نے یہ کردار ادا نہیں کیا ہے، ان کے پاس مواد ہے کہ دیگر ممالک اپنی ذمہ داری اٹھائیں۔

ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ ‘اب انہیں ایک منصفانہ اور پائیدار سیاسی تصفیے کے ساتھ ساتھ ایک جامع جنگ بندی لانے میں مدد دینے کے لیے تعمیری کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے’۔