گلوکارہ چیر نے ’کاون‘ ہاتھی کی مدد کیوں کی، انہیں اس کا کیسے علم ہوا تھا؟

318

دنیا کے ‘تنہا ترین’ ہاتھی قرار دیے جانے والے ‘کاون’ کو گزشتہ برس نومبر میں پاکستان سے کمبوڈیا منتقل کیا گیا اور اس کوشش میں امریکی گلوکارہ و اداکارہ چیر کا بڑا کردار تھا۔

گلوکارہ و اداکارہ چیر ہی وہ پہلی عالمی شخصیت تھیں، جنہوں نے پاکستان کے درالحکومت اسلام آباد کے چڑیا گھر میں بدتر حالات میں زندگی گزارنے والے ہاتھی ’کاون‘ سے متعلق آواز اٹھائی تھی۔

مگر سوال یہ ہے کہ گلوکارہ چیر نے ’کاون‘ کی مدد کیوں کی اور انہیں اس کی مشکلات کا کیسے علم ہوا تھا؟

اسی سوال کا جواب چیر نے حال ہی میں شوبز ویب سائٹ ’ورائٹی‘ کے پوڈکاسٹ میں دیا اور بتایا کہ انہیں کیسے ’کاون‘ کی مشکل زندگی کا علم ہوا تھا۔

گلوکارہ چیر نے بتایا کہ انہیں کچھ عرصہ قبل ٹوئٹر کے ذریعے معلوم ہوا تھا کہ پاکستان میں ’کاون‘ نامی ہاتھی بدترین حالات میں ہے اور لوگوں نے ان سے مذکورہ ہاتھی کی مدد کی درخواست کی تھی۔

اداکارہ نے بتایا کہ اگرچہ وہ ٹوئٹر پر زیادہ درخواستوں یا اپیلوں پر توجہ نہیں دیتی مگر چوں کہ بچپن سے انہیں جانوروں سے پیار تھا، اس لیے انہوں نے ’کاون‘ کی مدد کی اپیلوں پر توجہ دی اور اس کی مدد کرنے کا فیصلہ کیا۔

چیر کا کہنا تھا کہ بعد ازاں انہوں نے مذکورہ معاملے کو حل کرنے کے لیے جانوروں کی فلاح کے لیے کام کرنے والی عالمی تنظیموں کی مدد لی اور پھر ٹوئٹر پر براہ راست پاکستانی اداروں، عوام اور عہدیداروں سے ‘کاون‘ کو اسلام آباد چڑیا گھر سے نکالنے کا مطالبہ کرنے لگیں۔