ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان جوہری مذاکرات ملتوی

72

ایران اور 6 عالمی طاقتوں کے مذاکرات کار 2015 کے ایٹمی معاہدے کی بحالی کو ملتوی کرتے ہوئے اپنے اپنے ملک واپس چلے گئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ‘رائٹرز’ کی رپورٹ کے مطابق ایران کے اعلیٰ مذاکرات کار عباس اراقچی نے ویانا سے سرکاری ٹی وی کو بتایا کہ ’اب ہم معاہدے کے قریب تر ہیں تاہم جو فاصلہ ہمارے اور معاہدے کے درمیان موجود ہے اسے ختم کرنا آسان کام نہیں ہے، ہم آج رات تہران واپس آئیں گے‘۔

اپنے حالیہ دور میں ایک ہفتے سے زیادہ جاری رہنے والے مذاکرات کے بعد معاہدے کے فریقین نے اسے ملتوی کردیا اور روس کے سفیر نے بتایا کہ فی الوقت مذاکرات کی بحالی کے لیے کوئی تاریخ طے نہیں کی گئی ہے لیکن انہوں نے کہا کہ وہ تقریباً 10 دن میں واپس آسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ ویانا میں اپریل سے بات چیت جاری ہے کہ ایران اور امریکا کو جوہری معاہدے کی مکمل تعمیل پر واپس آنے کے لیے ایٹمی سرگرمیوں اور پابندیوں پر عمل پیرا ہونا ضروری ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.