ایران میں صدارتی انتخاب کیلئے پولنگ

223

ایران میں کم ٹرن آؤٹ کے خدشات کے ساتھ صدارتی انتخاب کے لیے الیکشن ہورہا ہے جہاں مجموعی طور پر 6 کروڑ ووٹرز اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے۔

غیرملکی خبررساں ادارے ‘اے ایف پی’ کے مطابق ایرانی عوام صدارتی انتخاب میں 4 اُمیدواروں سے ایک کو منتخب کریں گے جو صدر حسن روحانی کی جگہ صدارتی منصب سنبھالے گا۔

ایران میں 12 رکنی گارجین کونسل نے سیکڑوں امیدواروں سمیت اصلاح پسندوں اور حسن روحانی کے ساتھ اتحاد کرنے والوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

پولنگ کا آغاز صبح 7 بجے ہوا جو آدھی رات تک جاری رہے گا جس میں صرف دو گھنٹے کی توسیع کی جا سکتی ہے جبکہ ہفتے کی درمیانی شب کو نتائج کا اعلان موقع ہیں۔

دارالحکومت تہران میں اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے ایرانیوں سے کہا کہ ‘ہر ووٹ کا شمار ہوتا ہے اس لیے اپنا ووٹ ضرور دیں اور اپنے صدر کا انتخاب کریں’۔

ماہرین کا کہنا کہ امریکی پابندیوں کے نتیجے میں مہنگائی اور غربت میں اضافے کے پیش نظر مذکورہ صدارتی انتخاب موجودہ قیادت کے لیے ایک ریفرنڈم ہے۔