جی سیون ممالک کا موسمیاتی چیلنجز سے نمٹنے پر اتفاق

288

عالمی معیشتوں کے اتحاد جی سیون ممالک نے غریب ممالک میں موسمیاتی تبدیلی کے چیلنجزمثلاً کاربن کے اخراج کو کم کرنے اور گلوبل وارمنگ سے نمٹنے کے لیے سالانہ ایک سو ارب ڈالر کے واجب الادا اخراجات کے وعدے کو پورا کرنے کا عندیہ دیا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے ’رائٹرز‘ کے مطابق جدید ترین معیشت کے حامل ممالک نے ایک مرتبہ پھر اس ہدف کو پورا کرنے کا عہد کریں گے۔

جی سیون ممالک کی جانب سے ترقی پذیر ممالک میں انفراسٹرکچر منصوبوں کی مالی اعانت کو تیز کرنے اور قابل تجدید اور پائیدار ٹیکنالوجی کی جانب منتقلی کے منصوبے شامل ہیں۔

جنوب مغربی انگلینڈ میں جی سیون سربراہی اجلاس میں رہنماؤں کی جانب سے ایک واضح دباؤ تھا کہ دنیا میں بالخصوص ترقی پذیر ممالک میں چین کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کا مقابلہ کرنے کی کوشش تیز کی جائیں۔

انہوں نے بیجنگ کے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کے مقابلے میں منصوبہ شروع کرنے پر غور کیا۔

تاہم اس ضمن میں تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں۔

جی سیون ممالک کے اجلاس سے بعض گروپس نے عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔