بڑی کامیابی، محفوظ ترین کرونا ویکسین کی حتمی آزمائش کا اعلان

244

شکاگو:امریکی کمپنی موڈرنا نے کہا ہے کہ چوہوں پر استعمال کی جانے والی ویکسین محفوظ ترین ہے، اس کی ایک خوراک کرونا وائرس سے تحفظ فراہم کرسکتی ہے۔

امریکی ماہرین نے موڈرنا کمپنی کی ویکسین کا چوہوں پر تجربہ کیا جس کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے، نئی تحقیق میں چھ ہفتوں کے چوہوں پر موڈرنا ویکسین کی مختلف مقدار میں ایک یا دو خوراکیں دی گئیں اس کے بعد محققین نے چوہوں کو وائرس والے مقام پر چند ہفتوں کے لیے چھوڑ دیا۔

امریکی انسٹیٹیوٹ آف الرجی اور متعدی بیماری (این آئی اے آئی ڈی) اور ویکسین ریسرچ سینٹر کے ڈاکٹر بارنی گراہم اور ان کی ٹیم کے مطابق تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ویکسین اینٹی باڈیز بنانے میں مدد فراہم کرنے کے ساتھ مدافعتی نظام کو مضبوط بناتی ہے۔ تحقیقی ماہرین کے مطابق یہ ویکسین کرونا وائرس کے نتیجے میں ہونے والے انفیکشن سے محفوظ رکھتی ہے

تحقیقی رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی کہ کرونا کی وجہ سے پھیپٹروں اور ناک میں ہونے والے انفیکشن کو اس ویکسین کی مدد سے دور کیا جاسکتا ہے۔

امریکی کمپنی موڈرنا ان کی تحقیق کے مطابق چوہوں پر استعمال کی جانے والی دوا کا انسانوں پر آزمائش سے کوئی خطرہ نہیں ہے،یہ ویکسین کرونا کے خلاف موثر ثابت ہوسکتی ہے۔

اس سے قبل سارس وائرس کے حوالے سے کی جانے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ اس قسم کے وائرس کے خلاف ویکسین کے استعمال سے شدید بیماری پیدا ہونے کا خدشہ ہے، جب کوئی ویکسین لینے والا شخص وائرس سے متاثر ہو، خاص کر ایسا شخص جس کی قوت مدافعت کمزور ہو۔

این آئی اے آئی ڈی اور موڈرنا کے جاری کردہ اعداد وشمار حوصلہ افراز تھے لیکن چوہوں پر استعمال کی جانے والی ویکسین کا ڈیٹا اس بات کی ضمانت نہیں دیتا کہ انسانوں پر ویکسین کے استعمال کے کیا اثرات سامنے آئیں گے۔

موڈرنا کی جانب سے تیار کردہ ویکسین کی جانچ فی الحال صحت مند رضا کاروں پر جاری ہے تاہم امریکی کمپنی جولائی میں 30 ہزار افراد پر ویکسین کی آزمائش کا ارادہ رکھتی ہے۔