مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں کا جینا مشکل،انتہا پسند یہودیوں نے ظلم کی انتہا کر دی

283

مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں کا جینا مشکل ہوگیا۔ انتہا پسند یہودیوں نے ظلم کی انتہا کر دی۔عرب میڈیا کے مطابق مشرقی یروشلم کے قصبے شیخ جراح میں میں فلسطینیوں پر مظالم کی انتہا ہوگئی، انتہا پسند یہودی شہریوں نے فلسطینیوں کے گھروں پر قبضے کرکے انہیں بے دخل کردیا۔ بائیس سالہ فلسطینی خاتون یہودی شہری کو گھر سے نکلنے کا کہتی رہی۔

یہودی شہری نے کہا کہ اگر میں تمہارا گھر نہیں چراؤں گا تو کوئی اور چرا لے گا۔

عرب میڈیا کے مطابق ضعیف فلسطینی خاتون کی گھر میں قابض یہودیوں سے گفتگو کی ویڈیو بھی سامنے آگئی۔ اسرائیلی فورسز نے فلسطینیوں کو گھر چھوڑ کر علاقہ خالی کرنے کی وارننگ دی ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق صہیونی فورسز نے شیخ جراح کے علاقے میں فلسطینیوں کا داخلہ بند کردیا، چیک پوسٹس پر یہودی شہری فلسطینیوں انڈے برساتے ہیں۔ صہیونی فورسز نے فلسطینی خواتین سے مار پیٹ کی، لڑکی کا سر بھی پھٹ گیا۔ اسرائیلی فوجی مسجد کا تقدس پامال کرکے جوتوں سمیت اندر گھس گئے۔ مزاحمت کرنے متعدد نوجوانوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق اسرائلی عدالت نے بھی چھ فلسطینی خاندانوں کو گھر چھوڑنے کا حکم دیا ہے تاکہ یہودیوں کو بسایا جائے۔

حماس کا کہنا ہے کہ شیخ جراح میں مظالم بند نہ ہوئے تو اسرائیل کو قیمت چکانی پڑے گی۔