’لاک ڈاؤن کے بجائے لاشوں کے انبار‘ کے متنازع بیان پر برطانوی وزیراعظم پر کڑی تنقید

221

لندن: ’لاک ڈاؤن نہیں لگائیں گے چاہے لاشوں کے انبار لگ جائیں‘ سے متعلق ایک بیان پر اپوزیشن نے برطانوی وزیر اعظم سے استعفے کا مطالبہ کردیا جبکہ بورس جانسن نے متنازع بیان کی تردید کردی۔

ڈیلی میل نے صفحہ اول پر جلی حروف میں سرخی لگائی کہ بورس جانسن نے کہا ہے کہ تیسری لہر میں لاک ڈاؤن لگانے کے بجائے لوگوں کی لاشوں کا انبار دیکھنا پسند کریں گے۔

بورس جانسن نے رواں سال جنوری میں پابندیوں کے ایک نئے دور کا حکم دیا تھا لیکن وہ اپنی کورونا وائرس پالیسیوں اور مالی معاملات کو لے کر اپنے سابق معاون ساتھی ڈومینک کمنگس کے ساتھ مخالف بیانات کی جنگ میں پھنس گئے ہیں۔

متنازع بیان سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ’نہیں، لیکن میں سمجھتا ہوں کہ اہم بات یہ ہے کہ لوگ ہم سے بطور حکومت چاہتے ہیں کہ لاک ڈاؤن کارآمد رہے‘۔

6 مئی کو برطانیہ میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات کے سلسلے میں انتخابی مہم پر بات کرتے ہوئے انہوں نے زور دیا کہ ویسٹ منسٹر میں ’لوگ جس چیز کے بارے میں بات کر رہے ہیں وہ اہم نہیں ہے۔