ماہیماچوہدری نے خوفناک حادثے اور کیریئر کے زوال کی کہانی بتادی

236

ممبئی: بالی ووڈ کی نوے کی دہائی کی معروف اداکارہ ماہیما چوہدری نے اپنے ساتھ ہوئے خوفناک حادثے اور اپنے کیریئر کے زوال کی کہانی بتاتے ہوئے کہا ہے کہ حادثے کے وقت انہیں ایسا محسوس ہوا تھا کہ اب وہ زندہ نہیں بچیں گی۔

اپنی پہلی ہی فلم’’پردیس‘‘ سےکروڑوں لوگوں کے دلوں میں گھر کرنے والی بالی ووڈ کی معروف اداکارہ ماہیما چوہدری ماضی میں نہایت خوفناک حادثے کاشکار ہوچکی ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف ان کے چہرے پر گہرے زخم آئے تھے اور وہ مرتے مرتے بچی تھیں بلکہ اس حادثے نے ان کے کیریئرکو بھی ختم کردیا تھا۔

حال ہی میں ایک انٹرویو کے دوران ماہیما چوہدری نے اپنی زندگی کےخوفناک حادثے کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا میں اجے دیوگن اور کاجول کی پروڈکشن میں بننے والی فلم ’’دل کیاکرے‘‘ میں کام کررہی تھی اور بنگلورو  میں فلم کی شوٹنگ کے لیے اسٹوڈیو جاتے ہوئے اچانک ایک تیزرفتار ٹرک نے میری کار کو ٹکر ماری اور گاڑی میں سامنے لگاہوا شیشہ ٹوٹ کر میرے چہرے پر لگا۔

ماہیما چوہدری نے کہا اس وقت مجھے لگا میں مرجاؤں گی کسی نے بھی اسپتال پہنچانے میں میری مدد نہیں کی اور مجھےبہت دیر بعد اسپتال پہنچایا گیا۔ ایکسیڈنٹ کے باعث میرے چہرے پر بہت گہرے زخم آئےتھے۔ ماہیما چوہدری نے بتایا کہ سرجری کے دوران ڈاکٹرز نے ان کے چہرے سے شیشے کے 67 ٹکڑے نکالے۔

انٹرویو کے دوران ماہیما چوہدری نے کہا کہ وہ آج بھی اس خوفناک حادثے کو یاد کرتے ہوئے جذباتی ہوجاتی ہیں۔ انہوں نے کہا اس حادثے کی وجہ سے ان کے چہرے پر کئی ٹانکیں آئے، انہیں گھر میں رہنا پڑا سورج کی روشنی سے بچنے کے لیے تاکہ چہرے پر زخموں کے نشانات باقی نہ رہیں میرے کمرے کو مکمل طور پر سیاہ کردیا گیا تھا۔ میں خود کو نہیں دیکھتی تھی میرے کمرے کوئی آئینہ نہیں تھا۔

ماہیما چوہدری نے بتایا کہ اس حادثے نے ان کے کیریئر کو بہت نقصان پہنچایا۔ جس وقت حادثہ ہوا اس دوران ان کے پاس کئی فلمیں تھیں لیکن انہیں ان تمام فلموں سے ہاتھ دھونا پڑا۔ ماہیما نے کہا میں نہیں چاہتی تھی کہ لوگوں کو میرے ساتھ ہوئے حادثے کے بارے میں پتہ چلے کیونکہ لوگ اس وقت آپ کی حمایت میں سامنے آتے تھے۔ اگر میں اس وقت لوگوں کو اپنے ساتھ ہوئے حادثے کے بارے میں بتاتی تو وہ کہتے اوہ اس کا تو چہرہ خراب ہوگیا کسی اور کو فلموں میں سائن کرلو۔