اقوام متحدہ کو سری لنکا میں ‘جنگی جرائم’ کے شواہد اکٹھا کرنے کا مینڈیٹ مل گیا

230

جینیوا: اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے چیف مشیل بیچلیٹ کو سری لنکا کی طویل خانہ جنگی سے متعلق جرائم کے بارے میں معلومات اور شواہد اکٹھا اور محفوظ کرنے کا مینڈیٹ دے دیا گیا۔

سری لنکا میں علیحدگی پسند تامل ٹائیگرز کی شکست کے ساتھ 2009 میں طویل خانہ جنگی ختم ہوئی تھی۔

گروپ کی صورت میں پیش کی گئی برطانیہ کی قرار داد کو ہیومن رائٹس کونسل نے منظور کیا جس کے تحت اپنے دفتر کے عملے کو اختیارات تفویض کیے۔

جنیوا میں 47 ممالک کے فورم میں تفتیش کے لیے 22 نے حق میں ووٹ دیے جبکہ چین اور پاکستان سمیت 11 ممالک نے مخالفت میں ووٹ دیے۔

علاوہ ازیں بھارت سمیت 11 ممالک کے نمائندہ غیر حاضر رہے۔

برطانوی سفیر جولین بریتھویٹ نے کناڈا، جرمنی، مالاوی، مونٹی نیگرو اور شمالی مقدونیہ پر مبنی ایک گروپ کی جانب سے پیش کردہ متن میں کہا کہ ‘استثنیٰ بہت بڑھ گئی ہے اور اس طرح کے کیسز پر کام رک گیا ہے’۔