ترکی نے خواتین کے خلاف تشدد سے متعلق یورپی معاہدہ ترک کردیا

221

ترک صدر طیب رجب اردوان نے خواتین کے تحفظ کے لیے بنائے گئے بین الاقوامی معاہدے سے خود کو علیحدہ کرلیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق استنبول کنونشن کے نام سے کونسل آف یورپ کے اس معاہدے میں گھریلو تشدد کو روکنے اور قانونی چارہ جوئی کرنے سمیت مساوات کے فروغ کا ذکر ہے۔

ترکی نے اس معاہدے پر 2011 میں دستخط کیے تھے تاہم حالیہ برسوں میں ملک میں عورتوں کے قتل کے کیسز میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

سرکاری گزٹ میں معاہدے کے خاتمے کی کوئی وجہ نہیں بتائی گئی تاہم اعلیٰ سرکاری عہدیداروں کا کہنا تھا کہ بیرونی سطح پر تصیح کے بجائے گھریلو قوانین خواتین کے حقوق کا تحفظ کرے گا۔