مصر: انسانی حقوق کی خاتون کارکن کو 18 ماہ قید کی سزا

210

مصر کی عدالت نے انسانی حقوق کی سرگرم خاتون کارکن کو جھوٹی خبریں پھیلانے کے الزام میں سزا سنادی۔

عرب میڈیا کے مطابق مصر کی عدالت نے خاتون ثنا سیف کو پولیس افسر کی تضحیک کرنے اور جھوٹی خبریں پھیلانے کے الزام میں 18 ماہ قید کی سزا سنائی ہے۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہےکہ ثنا سیف کو گزشتہ سال جون میں گرفتار کیا گیا تھا جن پر جھوٹی خبریں نشر کرنے، ملک میں صحت کے بحران اور جیلوں میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی افواہیں پھیلانے کا الزام ہےجب کہ ان پر فیس بک کے ذریعے پولیس افسر کی تضحیک کا بھی الزام عائد کیا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ثنا سیف اپنی گرفتاری کے بعد سے سکیورٹی حکام کی حراست میں ہیں اور انہوں نے اپنے اوپر عائد الزامات کی تردید کی ہے جب کہ ثنا کے وکیل نے قاہرہ کی کرمنل کورٹ کے فیصلے کو ہائیکورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق ثنا سیف کی بہن کا کہنا ہےکہ عدالت نے ثنا کی غیر موجودگی میں فیصلہ سنایا، فیصلے کے وقت ثنا کو عدالت میں پیش نہیں کیا گیا۔