قریبی شخص نے کم عمری میں ’ریپ‘ کیا، ڈیمی لواٹو

206

اداکارہ، گلوکارہ و نغمہ نگار 28 سالہ ڈیمی لواٹو نے انکشاف کیا ہے کہ 15 برس کی عمر میں قریبی شخص نے ان کا ’ریپ‘ کیا۔

ڈیمی لواٹو اگرچہ ماضی میں بچپن اور کم عمری میں استحصال کا شکار رہنے کا اعتراف کر چکی ہیں تاہم پہلی بار انہوں نے بتایا ہے کہ 15 برس کی عمر میں ان کا ’ریپ‘ کیا گیا۔

ڈیمی لواٹو کو ان کے حد سے زیادہ نشہ کرنے کی وجہ سے شہرت حاصل رہی اور 2018 کے وسط میں وہ حد سے زیادہ منشیات استعمال کرنے کی وجہ سے کئی دن تک ہسپتال میں زیر علاج بھی رہی تھیں۔

جولائی 2018 میں ڈیمی لواٹو کو بے ہوشی کی حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا تھا، جہاں وہ 4 دن تک غنودگی کی حالت میں رہی تھیں اور ڈاکٹرز نے ان کے لیے کہا تھا کہ وہ چند منٹوں کی مہمان ہیں۔

ڈیمی لواٹو نے اس حوالے سے بتایا تھا کہ حد سے زیادہ نشہ کرنے کی وجہ سے جب وہ ہسپتال میں منتقل ہوئی تھیں تب 4 دن کے اندر انہیں دوران علاج ایک دل کا دورہ، تین فالج اور دماغ کا اٹیک بھی ہوا تھا۔

ڈیمی لواٹو نے یہ انکشافات اپنی دستاویزی فلم ’ڈانسنگ ود ڈیول‘ کے ٹریلر میں کیے تھے، جسے اب ریلیز کردیا گیا۔

ڈیمی لواٹو کی ڈاکیومینٹری ’ڈانسنگ ود ڈیول‘ کی 2 قسطوں کو ایک فلم فیسٹیول میں دکھایا گیا، جس میں انہوں نے کئی انکشافات کیے۔

ڈیمی لواٹو کی مذکورہ دستاویزی فلم کے دو حصوں کو رواں ماہ 23 مارچ جب کہ باقی حصوں کو اپریل کے آغاز تک یوٹیوب پر ریلیز کردیا جائے گا۔

ان کی مذکورہ دستاویزی فلم میں ان کے پرانے انٹرویوز کی کلپس سمیت مختلف افراد کی جانب سے ان کے لیے کہی گئی باتوں کو شامل کیا گیا ہے جب کہ مذکورہ ڈاکیومینٹری میں ڈیمی لواٹو کے 2020 میں ریکارڈ کرائے گئے متعدد بیانات کو بھی شامل کیا ہے۔