’’سوئنگ کے سلطانوں‘‘ کا جاہ و جلال خطرے میں پڑ گیا

365
لندن: ریورس سوئنگ کے قصہ پارینہ بننے کاخدشہ ظاہر کیا جانے لگا، تھوک کے استعمال پر پابندی سے ’’سوئنگ کے سلطانوں‘‘ کا جاہ وجلال خطرے میں پڑ سکتا ہے۔

آئی سی سی کرکٹ کمیٹی نے کورونا وائرس کے پیش نظر گیند کو تھوک سے چمکانے پر پابندی کی سفارش کردی تھی، اس کی روشنی میں آئی سی سی نے کرکٹ کی محفوظ واپسی کیلیے گائیڈ لائنز جاری کیں،ان میں بولرز کو تھوک سے گیند چمکانے سے روکا گیا تاہم پسینہ استعمال کرنے کی اجازت دی گئی تھی، تھوک پر پابندی کی وجہ سے کرکٹ سے ریورس سوئنگ کا آرٹ ہی ختم ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

آئی سی سی بورڈ میٹنگ میں اس معاملے کا جائزہ لیا جائے گا، سوئنگ بولرز کی وجہ سے ہمیشہ ہی شائقین کو سنسنی خیز کرکٹ سے لطف اندوز ہونے کا موقع میسر آیا ہے، کرکٹ کی تاریخ میں سب سے غیرمعمولی انفرادی پرفارمنس 1972 میں سامنے آئی جب آسٹریلیا کے سوئنگ بولر باب میسی نے ڈیبیو پر انگلینڈ کیخلاف لارڈز ٹیسٹ میں 137 رنز کے عوض 16 وکٹیں لے کر سب کو حیران کردیا،اس کے بعد وہ صرف 5 ٹیسٹ ہی کھیل سکے اور مزید15 پلیئرز کوآؤٹ کیا۔