بھارتی کسانوں کا احتجاج جاری، مزید سینکڑوں گرفتار،صدرجوبائیڈن سے مداخلت کا مطالبہ

253

بھارتی کسانوں کا احتجاج جاری ہے، مزید سیکڑوں کاشتکار گرفتار لیے گئے، پولیس حراست میں تشدد کا انکشاف بھی ہوا ہے۔ جنوبی ایشیا کے چالیس وکلا نے امریکی صدرسے مطالبہ کیا ہے کہ وہ انسانی بنیادوں پر مداخلت کریں۔

بھارتی کسان اپنے حق کے لیے چٹان بن گئے، مودی سرکار بھی اپنی ہٹ دھرمی برقرار رکھے ہوئے ہے، کسانوں کی حمایت کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں جاری ہیں۔ گرفتار کی جانے والی ماحولیات کی کارکن اور کسانوں کے لیے ٹول کٹ بنانے والی دیشا راوی کی رہائی کے لیے مظاہرے شروع ہو گئے۔ دیشا راوی کی گرفتاری کے خلاف لوگوں نے بنگلور میں احتجاج کیا۔

دیشا راوی کو کسانوں کی تحریک سے متعلق ٹول کٹ بنانے پر گرفتار کیا گیا ہے۔ ٹول کٹ میں کسان تحریک کو آگے بڑھانے کے لیے لائحہ عمل بنایا گیا تھا، مظاہرے میں طلبہ اور سماجی کارکن شامل تھے۔ بنگلور کی اس کارکن کو دلی کی اسپیشل یونٹ نے گرفتار کیا تھا۔

ادھرحکومت نے مزید سیکڑوں کاشتکاروں کو گرفتار کر لیا، پولیس حراست میں تشدد کا انکشاف بھی ہوا ہے۔ جنوبی ایشیا کے چالیس وکلا نے امریکی صدر کوخط لکھا ہے جس میں کسانوں پر ہونے والے مظالم پر نومنتخب امریکی صدر جوبائیڈن سے انسانی بنیادوں پر مداخلت کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ برطانیہ کی کیمبرج یونیورسٹی نے بھی کسانوں کی حمایت کا اعلان کر دیا۔