جسٹن ٹمبر لیک کی برٹنی اسپیئرز اور جینٹ جیکسن سے 20 سال بعد معذرت

211

ہولی وڈ اداکار، گلوکار و پروڈیوسر 40 سالہ جسٹن ٹمبر لیک نے تقریبا دو دہائیوں بعد اپنے نامناسب رویے پر گلوکارہ و پاپ اسٹار 39 سالہ برٹنی اسپیئرز سے معافی مانگ لی۔

جسٹن ٹمبر لیک نے تقریبا ڈیڑھ دہائی بعد گلوکارہ جینٹ جیکسن کے ساتھ اختیار کیے گئے نامناسب رویے پر بھی معافی مانگی ہے۔

جسٹن ٹمبر لیک نے 12 فروری کو انسٹاگرام پر ایک پوسٹ میں دونوں اداکاراؤں و گلوکاراؤں سے اپنے نامناسب اور زن بیزاری کے رویے پر دل سے معافی مانگی۔

جسٹن ٹمبر لیک نے اپنی پوسٹ میں اعتراف کیا کہ دو دہائیاں قبل ان کا رویہ برٹنی اسپیئرز کے ساتھ درست نہیں تھا اور ساتھ ہی اعتراف کیا کہ 2004 میں انہوں نے گلوکارہ جینٹ جیکسن کے ساتھ بھی غلط رویہ اختیار کیا۔

اداکار و گلوکار نے اپنے معافی نامے میں لکھا کہ انہوں نے لوگوں کی جانب سے بھیجے گئے تمام سوشل میڈیا پیغامات دیکھے ہیں اور انہوں نے وہ تمام پوسٹس بھی پڑھیں، جن میں انہیں مینشن کیا گیا۔

جسٹن ٹمبر لیک نے برٹنی اسپیئرز اور جینٹ جیکسن کے ساتھ اپنائے گئے اپنے رویے پر معذرت کی اور ساتھ ہی کہا کہ انہیں احساس ہے کہ دنیا کا معاشی نظام ہی زن بیزاری پر مبنی ہے۔

جسٹن ٹمبر لیک نے برٹنی اسپیئرز اور گلوکارہ جینٹ جیکسن سے ایسے وقت میں معافی مانگی ہے جب کہ حال ہی میں اسٹریمنگ ویب سائٹ ’ہولو‘ پر برٹنی اسپیئرز کی زندگی پر ایک دستاویزی فلم نشر کی گئی تھی۔

’نیو یارک ٹائمز پریزنٹس: فارمنگ برٹنی اسپیئرز‘ نامی دستاویزی فلم کو گزشتہ ہفتے 6 فروری کو ’ہولو‘ پر نشر کیا گیا تھا۔

مذکورہ دستاویزی فلم میں برٹنی اسپیئرز کے کیریئر، ان کے ذہنی امراض میں مبتلا ہونے اور ان کے تمام تر معاملات کو دوسرے لوگوں یعنی ان کے والد اور ایک وکیل کو سپرد کیے جانے کے حالات کو دکھایا گیا تھا۔