افغانستان: بم دھماکا اور حملے کے دوران پولیس چیف سمیت 14 افراد ہلاک

242

افغانستان سے ایک افسوسناک خبر آئی ہے جہاں پر پولیس چیف کی گاڑی پر بم دھماکا کیا گیا جس کے باعث 5 افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔ دوسرے واقعے میں نمروز میں طالبان کے حملے میں 9 سکیورٹی اہلکار مارے گئے۔

افغان میڈیا کے مطابق کابل کی مرکزی شاہراہ پر عین اس وقت ریمورٹ کنٹرول بم دھماکا کیا گیا جب وہاں سے پولیس چیف کی گاڑی گزر رہی تھی، خوفناک دھماکے میں پولیس چیف محمد زئی کوچی موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔

دھماکے میں پولیس چیف کے دو محافظ اور 2 راہگیر بھی ہلاک ہوئے جب کہ دو راہگیر زخمی ہیں جنہیں قریبی ہسپتال منتقل کردیا گیا، دونوں زخمیوں کی حالت نازک بتائی جارہی ہے۔

تاحال کسی گروپ نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے تاہم کابل میں گزشتہ تین ماہ سے میزائل اور خود کش حملوں میں سیکیورٹی اور حکومتی حکام کو نشانہ بنایا گیا ہے جب کہ کابل یونیورسٹی پر بھی حملہ کیا گیا تھا جس میں 50 طلبا ہلاک ہوگئے تھے اور یہ کارروائیاں داعش نے کی تھیں۔

افغان میڈیا ’طلوع نیوز‘ کے مطابق دوسرا واقعہ صوبے نمروز میں پیش آیا ہے جہاں پر صوبائی کونسل ممبر کے نعمت اللہ صدیقی نے بتایا کہ طالبان کے حملے میں نو سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ پانچ افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں طبی امداد کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا ہے۔ اس حملے میں ایک دہشتگرد بھی ہلاک ہوا ہے۔

طلوع نیوز کے مطابق تاحال افغان طالبان کی طرف سے کوئی رد عمل سامنے آیا ہے کہ آیا حملہ انہوں نے کیا ہے۔