نو منتخب سیکریٹری آف اسٹیٹ انٹونی جے بلنکین کی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے ٹیلیفونک رابطہ،دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال

374

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور امریکا کے نو منتخب سیکریٹری آف اسٹیٹ انٹونی جے بلنکین نے ٹیلی فونک گفتگو کی اور دوطرفہ تعلقات، افغان امن عمل اور ڈینیئل پرل قتل کیس پر تبادلہ خیال کیا۔

سرکاری ذرائع کا کہنا تھا کہ شاہ محمود قریشی نے انٹونی جے بلنکین کو سیکریٹری آف اسٹیٹ کا دفتر سنبھالنے پر مبارک باد دی اور امریکا کے ساتھ مختلف معاملات پر مفادات کے استحکام پر مبنی وسیع شراکت داری قائم کرنے کے پاکستان کے عزم کی تائید کی۔

واضح رہے کہ انٹونی بلنکین نے 26 جنوری کو 71 ویں امریکی سیکریٹری آف اسٹیٹ کا حلف اٹھایا تھا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ نے ’پاکستان میں تبدیلی‘ پر روشنی ڈالتے ہوئے زور دیا کہ وزیراعظم عمران خان کی حکومت کا ایک نیا وژن ہے جس نے’معاشی شراکت داری، پڑوسیوں کے ساتھ امن قائم کرنے اور علاقائی تعاون کو بڑھانے پر توجہ دی‘۔

شاہ محمود قریشی نے سیکریٹری اسٹیٹ کو بتایا کہ مذاکراتی سیاسی حل کے ذریعے افغانستان میں امن دونوں ممالک کے درمیان ’بنیادی ہم آہنگی‘ میں سے ایک ہے۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ شاہ محمود قریشی نے امریکی سیکریٹری آف اسٹیٹ کو بتایا کہ تشدد میں کمی ضروری تھی تاکہ یہ افغانستان میں جنگ بندی اور جامع سیاسی حل کے لیے کام کا سبب بن سکے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے افغان امن عمل میں سہولت فراہم کی اور امن کے لیے شراکت دار کے طور پر امریکا کے ساتھ کام کرنے کے لیے پرعزم ہے۔

شاہ محمود قریشی نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی بے پناہ قربانیوں کے ساتھ ساتھ اس کے ’پختہ اقدامات‘ پر بھی روشنی ڈالی۔

اس موقع پر امریکی سیکریٹری آف اسٹیٹ نے یاد دلایا کہ پاکستان اور امریکا کی تعاون کی طویل تاریخ ہے، ساتھ ہی انہوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے لوگوں کی دی گئی قربانیوں کو تسلیم کیا۔

دوران گفتگو امریکی صحافی ڈینیئل پرل قتل کیس میں حالیہ پیش رفت کے تناظر میں وزیر خارجہ نے زور دیا کہ قانونی تقاضوں کے ذریعے انصاف کی فراہمی دونوں ممالک کے مفاد میں ہے۔

انہوں نے اس سلسلے میں حکام کی جانب سے اٹھائے جارہے اقدامات پر بھی روشنی ڈالی۔

علاوہ ازیں ذرائع کا کہنا تھا کہ شاہ محمود قریشی اور سیکریٹری انٹونی جے بلنکین نے رابطوں میں رہنے اور دوطرفہ ایجنڈے کو آگے بڑھانے اور خطے اور اس کے علاوہ ایک جیسے مفادات کے فروغ کے لیے کام کرنے پر اتفاق کیا۔

دوسری جانب امریکی سیکریٹری خارجہ کی جانب سے ایک ٹوئٹ بھی کی گئی جس میں لکھا گیا کہ ’انہوں نے ڈینیئل پرل کے کیس میں سزایافتہ دہشتگرد احمد عمر سعید شیخ اور دیگر ذمہ داروں کے لیے احتساب کو یقینی بنانے کے لیے شاہ محمود قریشی سے بات کی’۔