بھارت: جنسی ہراسانی کی اطلاع دینے والے کیمروں سے رازداری کو خطرہ

487

نئی دہلی: ڈیجیٹل حقوق کے ماہرین نے خبردار کیا کہ سڑک پر ہراساں ہونے والی خواتین کے تحفظ کے لیے چہرے کو شناخت کرنے والی ٹیکنالوجی کے ذریعے خواتین کے تاثرات کی نگرانی کے لئے بھارت میں پولیس کے ایک منصوبے سے مداخلت کی پولیسنگ اور رازداری کی خلاف ورزی ہوگی۔

پولیس کمشنر ڈی کے ٹھاکر نے بتایا کہ نئی دہلی سے تقریبا 500 کلومیٹر دور لکھنؤ میں پولیس نے 200 کے قریب ہراساں کرنے والے مقامات کی نشاندہی کی جہاں خواتین اکثر جاتی ہیں اور جہاں سے اکثر شکایات کی اطلاع ملتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ‘ہم 5 مصنوعی ذہانت پر مبنی کیمرے لگائیں گے جو قریبی پولیس اسٹیشن کو الرٹ بھیجیں گے’۔