جوبائیڈن کی حلف برداری تقریب، سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کا فیصلہ

51

کیپیٹل ہل تشدد کے تناظر میں نو منتخب جوبائیڈن کی حلف برداری تقریب کی سکیورٹی کیلئے فوجیوں کو تعینات کر رہے ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکا میں قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں نے کیپیٹل ہل کی عمارت میں ہونے والے پر تشدد واقعات کے درمیان نو منتخب صدر جو بائیڈن کی 20 جنوری کو ہونے والی حلف برداری تقریب کے لیے سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کا فیصلہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ کیییٹل ہل کے پرتشدد واقعات میں ایک پولیس اہلکار سمیت پانچ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔

 

ہوم لینڈ سکیورٹی کے کارگزار سکریٹری چاڈ اولف نے اپنے استعفے سے محض چند گھنٹے قبل کہا تھا کہ انہوں نے امریکی خفیہ سروس سے کہا ہے کہ وہ 13 جنوری سے ہی نیشنل سپیشل سکیورٹی کی تعیناتی کے عمل کا آغاز کر دے۔

ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ ہفتے کے واقعات اور حلف برداری تقریب تک سکیورٹی کی بدلتی صورت حال کے پیش نظر اصل منصوبے کے برعکس ایک ہفتہ قبل ہی خصوصی سکیورٹی کے بندوبست کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں وفاقی ایجنسیز، ریاستی ادارے اور مقامی حکام کے درمیان اس اہم تقریب کے لیے منصوبوں، پوزیشن اور وسائل کے سلسلے میں ہم آہنگی کا کام جاری رہیگا۔ ایسی تقاریب کی سکیورٹی کے ذمہ دار خفیہ ایجنسیز کے سربراہان قومی سطح پر بڑی اہمیت کے حامل ہوتے ہیں۔

یاد رہے کہ پیر کے روز ہی کیپیٹل ہل کی سکیورٹی کے لیے نیشنل گارڈ بیورو سے پندرہ ہزار مزید فوجیوں کو واشنگٹن بھیجنے کو کہا گیا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.