انڈونیشیا کے تباہ ہونیوالے مسافر طیارے سے متعلق نیا انکشاف سامنے آگیا

35

سمندر میں گرکر تباہ ہونے والے انڈونیشین طیارے سے متعلق انکشاف ہوا ہےکہ طیارے کو گزشتہ ماہ ہی انسپیکشن کے بعد کلیئر کیا گیا تھا۔

برطانوی میڈیا کےمطابق انڈونیشین ائیرلائن کمپنی سری وجائیا کی پرواز ایس جے 182 کو گزشتہ برس مارچ سے دسمبر کے درمیان گراؤنڈ کیا گیا تھا جس کی کمرشل پروازیں گزشتہ ماہ ہی 22 دسمبر سے بحال کی گئیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق طیارہ حادثے میں اب تک جہاز کے تباہ ہونے کی کوئی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے البتہ ابتدائی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ہےکہ تباہ ہونے سے پہلے بھی جہاز مکمل طور پر فنکشنل تھا۔

پیر کے روز انڈونیشیا کی پولیس نے طیارہ حادثے میں ہلاک ہونے والی ایک خاتون کی شناخت کی جو اسی پرواز کی 29 سالہ فلائٹ اٹینڈنٹ ہے۔

انڈونیشیا کی وزارت ٹرانسپورٹ کا کہنا ہےکہ بوئنگ 737 کو کورونا وائرس کی وجہ سے گراؤنڈ کیا گیا تھا لیکن 14 دسمبر کو مکمل جانچ پڑتال کے بعد طیارے کو کلیئرنس دی گئی تھی جس کے بعد طیارے نے 5 روز بعد ہی بغیر مسافروں کے اپنی پہلی پرواز مکمل کی تھی اور پھر اسے کمرشل پروازوں کی اجازت دی گئی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.