جرمنی میں برطانوی فرم، امریکی فوجی اڈا قاسم سلیمانی کے قتل میں ملوث تھا، ایران

304

ایران نے امریکا کے ہاتھوں عراق میں پاسداران انقلاب کی قدس فورس کے سربراہ میجر جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کی ذمہ داری جرمنی میں ایک برطانوی سیکیورٹی فرم اور امریکی ایئربیس پر عائد کی ہے۔

ایک نیوز کانفرنس میں تہران کے پراسیکیوٹر علی الکسیمہر نے بغیر ثبوت فراہم کیے دعویٰ کیا کہ لندن میں موجود سیکیورٹی سروس کی کمپنی ‘جی 4 ایس’ نے قاسم سلیمانی کے قتل میں کردار ادا کیا اور ان کے ہمراہ عراقی کمانڈر ابو مہدی المہندیس اور متعدد دیگر شامل تھے۔

عدلیہ کی سرکاری نیوز ویب سائٹ ‘میزان’ کے مطابق انہوں نے بغداد انٹرنیشنل ہوائی اڈے کے حوالے سے کہا کہ اس کمپنی کے ایجنٹوں نے جنرل قاسم سلیمانی اور ان کے ساتھی جنگجوؤں کی معلومات دہشت گردوں کو ہوائی اڈے میں داخل ہوتے ہی حوالے کردی تھیں’۔

دوسری جانب برطانوی کمپنی نے تصدیق کی کہ یہ قتل کے وقت عراقی سول ایوی ایشن اتھارٹی میں بطور آؤٹ سورس ‘سیکیورٹی کی متعدد سروسز’ کے انچارج تھے لیکن انہوں نے ایرانی پراسیکیوٹر کے الزامات کی تردید کی۔

جی 4 ایس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ ‘الزامات محض بے بنیاد اور قیاس پر مبنی ہیں، جی 4 ایس یہ واضح کرنا چاہتی ہے کہ 3 جنوری 2020 کو قاسم سلیمانی اور ان کے ساتھی پر ہونے والے حملے میں کمپنی کا قطعاً کوئی ہاتھ نہیں تھا’۔