امریکا میں سیاہ فام شہری کا قتل، شوبز ستاروں کی جانب سے تنقید کا سلسلہ جاری

282

نیو یارک: امریکا میں سیاہ فام شہری کے قتل کے خلاف سربراہان مملکت اور شوبز ستاروں کی جانب سے تنقید کا سلسلہ جاری ہے، امریکی گلوکارہ لیڈی گاگا، ٹیلر سوفٹ اور کم کردشیان سمیت دیگر سلیبرٹیز بھی بول پڑے۔ نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن کا کہنا ہے کہ جارج فلائیڈ کے قتل نے انہیں سانحہ کرائسٹ چرچ کی یاد دلا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سربراہان مملکت اور شوبز ستاروں کی جانب سے امریکا میں سیاہ فام افراد سے اظہار یکجہتی جاری ہے، نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے جارج فلائیڈ کے قتل پر تشویش کا اظہار کیا، انہوں نے کہا کہ اس واقعہ نے انہیں سانحہ کراست چرچ کی یاد دلا دی۔

امریکی گلوکارہ لیڈی گاگا کا کہنا ہے کہ سینکڑوں سال سے اس ملک میں سیاہ فام شہریوں کا قتل جاری ہے، امریکی عوام میں سیاہ فاموں کے خلاف تعصب موجود ہے۔

 

گلوکارہ ٹیلر سوفٹ نے واقعہ کا ذمہ دار امریکی صدر کو قرار دیتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ ٹرمپ اپنے دور صدارت میں سفید فاموں کی برتری اور نسل پرستی کو ہوا دیتے رہے۔

امریکن ماڈل اور ایکٹرس کِم کردشیان نے پوسٹ کیا کہ وہ افریقن امریکن ہونے کے ناطے سیاہ فاموں کے قتل کی کھل کر مذمت نہیں کر سکیں مگر اب وہ اپنی آواز نہیں دبائیں گی اور قتل کی کھل کر مذمت کرتی ہیں۔