سعودی عرب: خواتین کے حقوق کی کارکن کو 5 سال 8 ماہ قید کی سزا

378

سعودی عرب کی ایک عدالت نے خواتین کے حقوق کے لیے سرگرم کارکن لوجین الحاتلول کو 5 سال اور 8 ماہ قید کی سزا سنا دی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ’رائٹرز‘ کے مطابق ان کے اہل خانہ اور مقامی میڈیا نے کہا کہ مقدمے پر بین الاقوامی سطح پر مذمت کی گئی ہے۔

31 سالہ لوجین الحاتلول کو خواتین کے حقوق سے متعلق کم از کم ایک درجن دیگر کارکنوں کے ساتھ 2018 میں گرفتار کیا گیا تھا۔

عدالتی فیصلے کو ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے نومنتخب امریکی صدر جو بائیڈن کے ساتھ تعلقات کے تناظر میں نازک مرحلہ سمجھا جارہا ہے، کیونکہ وہ ریاض میں انسانی حقوق کے ریکارڈ پر تنقید کرچکے ہیں۔

سبق اور الشرک الاوسط اخبارات کے مطابق لوجین الحاتلول پر سعودی سیاسی نظام کو تبدیل کرنے اور قومی سلامتی کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

اخبارات اور لوجین الحاتلول کی بہن نے بتایا کہ عدالت نے مجموعی سزا سے مئی 2018 کو گرفتاری کے بعد دو سال اور 10 ماہ کی سزا معطل کردی۔